اکبر بگٹی قتل کیس میں سابق صدر پرویز مشرف پر فرد جرم عائد

ویب ڈیسک  بدھ 14 جنوری 2015
عدالت نے سابق صدر کی طبیعت سے متعلق جاننے کے لئے میڈیکل بورڈ کی عدم تشکیل پر شدید برہمی کا اظہار کیا۔ فوٹو:فائل

عدالت نے سابق صدر کی طبیعت سے متعلق جاننے کے لئے میڈیکل بورڈ کی عدم تشکیل پر شدید برہمی کا اظہار کیا۔ فوٹو:فائل

کوئٹہ: انسداد دہشتگردی عدالت نے نواب اکبر بگٹی قتل کیس میں عدم پیشی پر سابق صدر پرویز مشرف سمیت 3 افراد پر فرد جرم عائد کردی۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق کوئٹہ کی انسداد دہشتگردی عدالت میں نواب اکبر بگٹی قتل کیس کی سماعت ہوئی اس موقع پر سابق صدر پرویز مشرف کے وکیل نے عدالت سے استدعا کی کہ سابق صدر طبیعت کی ناسازی کے باعث پیش نہیں ہوسکتے اس لئے انہیں حاضری سے استثنیٰ دیا جائے جس پر عدالت نے میڈیکل بورڈ کی عدم تشکیل پر شدید برہمی کا اظہار کیا جب کہ مدعی جمیل اکبر بگٹی کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ہم نے مختلف ٹی وی چینلز پر دیکھا ہے کہ پرویز مشرف انٹرویو دیتے ہیں لیکن عدالت کے سامنے پیش نہیں ہوتے۔

عدالت نے وکلا کے دلائل سننے کے بعد سابق صدر پرویز مشرف،سابق وفاقی وزیرداخلہ آفتاب احمد خان شیرپاؤ اور صوبائی وزیرداخلہ شعیب نوشیروانی پر فرد جرم عائد کرتے ہوئے سماعت 4 فروری تک ملتوی کردی۔

واضح رہے کہ نواب اکبر بگٹی کے صاحبزادے جمیل اکبر بگٹی کی جانب سے 2009 میں والد کے  قتل کا مقدمہ درج کرایا گیا تھا جس میں سابق صدر پرویز مشرف، سابق وفاقی وزیرداخلہ آفتاب احمد خان شیرپاؤ، صوبائی وزیرداخلہ شعیب نوشیروانی اور اس وقت کے گورنر اویس غنی کو نامزد کیا تھا۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔