یوحنا آباد میں 2افراد کو جلانے کا مقدمہ انسداد دہشتگردی کی عدالت میں چلے گا، شہباز شریف

ویب ڈیسک  اتوار 22 مارچ 2015
وزیراعلیٰ پنجاب نے محمد نعیم کے اہل خانہ کو دلاسہ دیتے ہوئے کہا کہ ملزمان کو جلد انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے گا۔ فوٹو: فائل

وزیراعلیٰ پنجاب نے محمد نعیم کے اہل خانہ کو دلاسہ دیتے ہوئے کہا کہ ملزمان کو جلد انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے گا۔ فوٹو: فائل

قصور: وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے یوحنا آباد میں زندہ انسانوں کو جلانے والے کسی رعایت کے مستحق نہیں اور ان کے خلاف مقدمہ انسداد دہشت گردی کی عدالت میں چلایا جائےگا۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق وزیر اعلیٰ پنجاب نے قصور میں محمد نعیم کی رہائش گاہ پران کے والدین سے اظہار تعزیت کیا، ان کا کہنا تھا کہ وہ حافظ نعیم کی زندگی تو واپس نہیں لا سکتے لیکن یقین دلاتے ہیں کہ ہر قیمت پر انصاف کیاجائے گا، زندہ انسانوں کو جلانے والے کسی رعایت کے مستحق نہیں، مقدمے میں نامزد 30 افراد کو گرفتار کر لیا گیا ہے جن کے خلاف مقدمہ انسداد دہشت گردی کی عدالت میں چلایا جائےگا۔

واضح رہے کہ گذشتہ  ہفتے لاہور کے علاقے یوحنا آباد میں کیتھولک چرچ اور کرائسٹ چرچ کے باہرخودکش دھماکوں میں 21 افراد کی ہلاکت کے بعد مشتعل افراد نے محمد نعیم سمیت 2 افراد کو تشدد کا نشانہ بنانے کے بعد انہیں زندہ جلا دیا تھا۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔