امریکا نے طالبان کو کبھی دشمن نہیں سمجھا، ڈینیل فیلڈمین

آئی این پی  پير 30 مارچ 2015
 اگرطالبان دہشت گردی چھوڑدیں تووہ افغان حکومت کے معاملات میں شامل ہوسکتے ہیں، امریکی نمائندہ برائے افغانستان وپاکستان۔ فوٹو: فائل

اگرطالبان دہشت گردی چھوڑدیں تووہ افغان حکومت کے معاملات میں شامل ہوسکتے ہیں، امریکی نمائندہ برائے افغانستان وپاکستان۔ فوٹو: فائل

واشنگٹن: امریکی نمائندہ برائے افغانستان وپاکستان ڈینیل فیلڈمین نے کہاہے کہ امریکانے طالبان کوکبھی دشمن نہیں سمجھا، امریکاہمیشہ دہشت گردی کے خلاف رہاہے، پاک افغان سرحدپر امن پاکستان کے استحکام کے لیے ضروری ہے۔

عالمی میڈیا کے مطابق انھوں نے کہاکہ پاکستان کی فوجی قیادت افغانستان کے معاملے پرمتحد ہے۔ افغان تصفیے میں پاکستان کا ایک اہم کردار ہے۔ افغانستان میں پاکستان کے کردارپر افغان صدرسے تفصیلی بات چیت ہوئی۔ طالبان کے حوالے سے ڈینیل فیلڈمین کا کہنا تھا کہ بین الاقوامی برادری طالبان کاافغان حکومت کے ساتھ پرامن تصفیہ چاہتی ہے۔ یہ کہنا قبل ازوقت ہے کہ طالبان کے ساتھ مذاکرات کامیاب ہوں گے یانہیں۔ اگرطالبان دہشت گردی چھوڑدیں تووہ افغان حکومت کے معاملات میں شامل ہوسکتے ہیں۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔