مصطفیٰ کمال بھی صرف گھر کے ہی شیر نکلے

اسپورٹس ڈیسک  جمعرات 2 اپريل 2015
مصطفیٰ کمال کے ایک سالہ عہدے کی مدت کے ابھی تین ماہ باقی تھے مگر اب ان کے استعفے کے بعد آئی سی سی بورڈ نئے صدر کا فیصلہ کرے گا۔  فوٹو : اے ایف پی

مصطفیٰ کمال کے ایک سالہ عہدے کی مدت کے ابھی تین ماہ باقی تھے مگر اب ان کے استعفے کے بعد آئی سی سی بورڈ نئے صدر کا فیصلہ کرے گا۔ فوٹو : اے ایف پی

دبئی: مصطفیٰ کمال بھی صرف گھر کے ہی شیر نکلے، آئی سی سی کو خط میں انھوں نے لکھا کہ نجی وجوہات کے سبب استعفیٰ دیا،کونسل نے دعویٰ کیاکہ سابق صدر نے تمام ممبران سے معافی بھی مانگ لی۔

تفصیلات کے مطابق مصطفیٰ کمال ورلڈ کپ کی ٹرافی فاتح آسٹریلوی ٹیم کو نہ دینے کا حق چھننے کے بعد چیختے چلاتے بنگلہ دیش پہنچے اور وہاں پریس کانفرنس میں آئی سی سی کو برا بھلا کہتے ہوئے استعفیٰ دینے کا اعلان کردیا، مگر دلچسپ بات یہ ہے کہ انھوں نے اپنے  استعفے میں ایسی کسی بات کا ذکر تک نہیں کیا جس کا وہ اپنے ملکی میڈیا کے سامنے شور مچاتے رہے۔

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کی جانب سے جاری کردہ اعلامیے میں دعویٰ کیا گیاکہ مصطفیٰ کمال کا استعفیٰ نہ صرف انھیں موصول ہوگیا بلکہ اس میں انھوں نے فیصلے کا سبب ذاتی معاملات کو قرار دیا ہے۔ چیف ایگزیکٹیو ڈیو رچرڈسن کے نام خط میں انھوں نے یہ بھی لکھاکہ انھیں کسی سے کوئی شکایت نہیں اور گورننگ باڈی سے منسلک تمام لوگوں سے معافی کے بھی طلبگار ہیں۔

مصطفیٰ کمال اسی خط میں آگے لکھتے ہیں کہ آئی سی سی کی قیادت میں کرکٹ کے کھیل کو ہر شائق کے دل و دماغ کو چھونے دینا چاہیے۔ واضح رہے کہ مصطفیٰ کمال کے ایک سالہ عہدے کی مدت کے ابھی تین ماہ باقی تھے، وہ جون تک یہ ذمہ داری جاری رکھتے مگر اب ان کے استعفے کے بعد آئی سی سی بورڈ دبئی میں 15 اور 16 اپریل کو نئے صدر کا فیصلہ کرے گا۔

یہ عہدہ اب پاکستان کرکٹ بورڈ کے سابق چیئرمین نجم سیٹھی کو ملنا ہے، اگر رواں ماہ وہ ذمہ داری سنبھال لیتے ہیں تو پھر وہ ایک کے بجائے سوا سال تک اس عہدے پر فائز رہیں گے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔