پنجاب میں خواتین کی شکایت پر مردوں کے جسم میں ’’ٹریکر‘‘ لگانے کا بل پاس

ویب ڈیسک  اتوار 7 جون 2015
 مردوں کو خواتین کے ساتھ ذرا سی بھی چھیڑ چھاڑ پر جیل بھی جانا پڑ سکتا ہے۔  : فوٹو: فائل

مردوں کو خواتین کے ساتھ ذرا سی بھی چھیڑ چھاڑ پر جیل بھی جانا پڑ سکتا ہے۔ : فوٹو: فائل

لاہور: پنجاب اسمبلی کی سوشل ویلفئیر کمیٹی نے نئے مسودہ قانون کی منظوری دی ہے جس کے تحت صنف نازک کی شکایت پر مرد حضرات کو ناصرف جیل یاترا بلکہ اس کے جسم میں ٹریکر بھی لگ سکے گا۔

پنجاب اسمبلی کی سوشل ویلفئیر کمیٹی کی جانب سے مرتب کئے گئے مجوزہ بل کی منظوری کے لئے آئندہ اجلاس میں پیش کیا جائے گا۔ بل کے تحت شادی شدہ مرد حضرات کو اپنی تنخواہ نہ صرف بتانا ہوگی بلکہ اپنی آمدنی کی مخصوص رقم بیوی کو بھی دینا پڑے گی اوراگر ایسا نہ کیا تومرد کی تنخواہ بیوی کے اکاؤنٹ میں بھی جاسکتی ہے، اس کے علاوہ بیوی کی شکایت پر شادی شدہ حضرات کے جسم میں ٹریکر بھی لگ سکتا ہے جس سے بیوی کو اپنے مجازی خدا کی آمدورفت کا پتہ چل سکے گا۔

مجوزہ قانون کے لاگو ہونے پر عوامی مقامات اور کسی بھی شعبہ زندگی سے منسلک خواتین کو کسی بھی مرد کی جانب سے ذرا سی بھی چھیڑ چھاڑ پر جیل بھی جانا پڑ سکتا ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔