سانحہ بلدیہ: فیکٹری مالکان کا 2روزہ جسمانی ریمانڈ

اسٹاف رپورٹر  جمعـء 19 اکتوبر 2012
عدالت نے جیل حکام کو حکم دیا ہے کہ ملزمان کو 19اکتوبرکی طلوع آفتاب پر پولیس کے حوالے کیاجائے اور20 اکتوبر کو غروب آفتاب تک تحویل واپس لی جائے. فوٹو: اے ایف پی/ فائل

عدالت نے جیل حکام کو حکم دیا ہے کہ ملزمان کو 19اکتوبرکی طلوع آفتاب پر پولیس کے حوالے کیاجائے اور20 اکتوبر کو غروب آفتاب تک تحویل واپس لی جائے. فوٹو: اے ایف پی/ فائل

کراچی: سانحہ بلدیہ آتشزدگی کیس میں فیکٹری مالکان کا جسمانی ریمانڈ دینے سے متعلق دائر درخواست عدالت نے منظور کرلی ہے اور ماتحت عدالت کے فیصلے کو کالعدم قرار دیتے ہوئے ملزمان ارشد بھائیلہ اور شاہد بھائیلہ کو دو روز کے جسمانی ریمانڈ پرپولیس کی تحویل میں دینے کیلیے جیل حکام کو احکامات جاری کردیے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق جمعرات کو ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج غربی عبداﷲ چنہ نے پولیس کی جانب سے جوڈیشل مجسٹریٹ کے فیصلے کیخلاف دائر اپیل منظور کرتے ہوئے جوڈیشل مجسٹریٹ غربی سہیل احمد مشوری کے فیصلے کو کالعدم قرار دیدیا اور مذکورہ ملزمان کو دو روز کے جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے سپرد کرنے کیلیے جیل حکام کو حکم دیا ہے اور پولیس کو دوران تفتیش تشدد نہ کرنے کی تلقین کی ہے، عدالت نے جیل حکام کو حکم دیا ہے کہ ملزمان کو 19اکتوبرکی طلوع آفتاب پر پولیس کے حوالے کیاجائے اور20 اکتوبر کو غروب آفتاب تک تحویل واپس لی جائے۔

عدالت نے ملزمان کو پولیس کے حوالے کرنے سے قبل طبی معائنہ کرانے کا حکم دیا ہے اور جیل حکام کو کہا گیا ہے کہ ریمانڈ کے بعد دوبارہ طبی معائنہ کرایا جائے تاکہ پولیس کی حراست میں تشدد کی نشاندہی کی جاسکے ،فاضل عدالت نے میڈیکل رپورٹ بھی عدالت میں جمع کرانے کی ہدایت کی ہے،قبل ازیں جوڈیشل مجسٹریٹ نے پولیس کی جانب سے ریمانڈ دینے سے متعلق دائر درخواست مسترد کردی تھی اورملزمان کو عدالتی ریمانڈ پر جیل بھیج دیا تھا،ماتحت عدالت کے فیصلے کے خلاف پولیس نے فاضل عدالت میں اپیل دائر کرتے ہوئے موقف اختیار کیا تھا کہ تفتیش مکمل کرنے کے لیے ملزمان سے 259ملازمین کی ہلاکت کے سلسلے میں تحقیقات کرنا لازمی ہے ،ماتحت عدالت نے تحقیقات کے لیے ملزمان کا جسمانی ریمانڈ نہیں دیا ہے اور درخواست میں حتمی چالان جمع کرانے کیلیے ملزمان سے تحقیقات کیلیے جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی تھی۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔