جامعہ اردو، وی سی کیلئے اشتہار عمر کی حد کے بغیر جاری کرنیکی منظوری

صفدر رضوی  ہفتہ 20 اکتوبر 2012
 صدرآصف زرداری ہی جامعہ اردو کو انتظامی اورعلمی بحران سے نجات دلاسکتے ہیں،شیخ الجامعہ کی تعیناتی کو جلد از جلد یقینی بنایا جائے،اساتذہ.  فوٹو: فائل

صدرآصف زرداری ہی جامعہ اردو کو انتظامی اورعلمی بحران سے نجات دلاسکتے ہیں،شیخ الجامعہ کی تعیناتی کو جلد از جلد یقینی بنایا جائے،اساتذہ. فوٹو: فائل

کراچی: ایوان صدر نے وفاقی اردو یونیورسٹی میں وائس چانسلرکے تقررکے لیے عمرکی حد ختم کرنے کی منظوری دے دی اور آئندہ آنے والا اشتہار عمرکی حدکے بغیرجاری کیا جائے گا۔

فیصلے سے سینئر ترین ماہرین تعلیم اوراعلیٰ پائے کے منتظم بھی وائس چانسلرکے عہدے کیلیے درخواست دینے کے اہل ہوگئے ہیں،علاوہ ازیں وفاقی اردو یونیورسٹی کی سینیٹ نے ایوان صدرکی جانب سے وائس چانسلرکے امیدواروں کے نام مستردکیے جانے کے بعد نئے شیخ الجامعہ کے انتخاب کے لیے اشتہارجاری کرنے کی منظوری دے دی ہے،اس بات کی منظوری جمعہ کو اردو یونیورسٹی سائنس کیمپس میں منعقدہ سینیٹ کے اجلاس میں دی گئی جو ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کی زیرصدارت منعقدہ ہوا۔

علاوہ ازیں یونیورسٹی کی تلاش کمیٹی کی طویل جدوجہد کے بعد تین نام مسترد کیے جانے کے بعد اب سرچ کمیٹی کی رکنیت سے جامعہ کراچی کے سابق وائس چانسلرپروفیسرڈاکٹر پیرزادہ قاسم رضا صدیقی مستعفی ہوگئے،ڈاکٹر پیرزادہ قاسم کی جگہ اب جامعہ اردوکے موجودہ وائس چانسلر پروفیسرڈاکٹرمحمد قیصر کو تلاش کمیٹی میں شامل کرلیا گیا ہے جبکہ مزید ایک رکن نے استعفیٰ دے دیا ہے جن کی جگہ نوشاد شیخ کوتلاش کمیٹی میں باقاعدہ رکن کی حیثیت سے شامل کیا گیا ہے، علاوہ ازیں وفاقی جامعہ اردو کے منتخب اساتذہ نما ئندوںسینٹر پروفیسر ناصر عباس اور سینیٹر پروفیسر سیما نازصدیقی نے جامعہ اردو کی سینیٹ کے 23ویں اجلاس اور بعدازاں ہونے والے اساتذہ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم نے واضح کردیا ہے کہ ہم جامعہ اردو میںکسی غیر آئینی اقدام کو قبول نہیں کریں گے۔

اب جبکہ چانسلر نے اپنے آئینی اختیارات استعمال کرتے ہوئے شیخ الجامعہ کی تقرری کے حوالے سے تین ناموں کو مسترد کرکے نئے اشتہار کی ہدایت کی ہے تو اس کے بعد شیخ الجامعہ کے تقررکا عمل تیز سے تیز ترہونا چاہیے جبکہ انجمن اساتذہ عبدالحق کیمپس کے صدر پروفیسر ڈاکٹر اسماعیل موسیٰ ، نائب صدر سعیدہ دائود معتمد عمومی نجم العارفین نائب معتمد عمومی سیما ابڑو،خازن اقرارعلی قریشی نے دو ٹوک الفاظ میں واضح کیا ہے کہ ہمارا کسی ہڑتال اور احتجاج سے کوئی تعلق نہیں ہے ۔

اس موقع پر ڈاکٹر توصیف احمد خان، ڈاکٹر محمد زاہد اورڈاکٹرعارف زبیر نے سینیٹ کے اجلاس میںشرکت کرنیوالے پروفیسر ناصرعباس اور پروفیسر سیما نازصدیقی کو جامعہ اردو کے تمام اساتذہ کی بھر پور نمائندگی کرنے پر مبارک باد دی،اساتذہ رہنمائوں نے کہا ہے کہ ہم امیدکرتے ہیں کہ چانسلر صدرآصف علی زرداری جامعہ اردو کو شدید نوعیت کے انتظامی اورعلمی بحران سے نجات دلائینگے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔