ماہرین نے الٹراسونک لہروں سے کپڑے دھونے والا آلہ تیار کرلیا

ویب ڈیسک  اتوار 3 جنوری 2016
ڈولفی کو ایک بیگ میں رکھ کر کہیں بھی لے جایا جاسکتا ہے ۔ فوٹو: فائل

ڈولفی کو ایک بیگ میں رکھ کر کہیں بھی لے جایا جاسکتا ہے ۔ فوٹو: فائل

اسٹاک ہوم: ماہرین نے کپڑے دھونے والا ایک انقلابی آلہ تیار کیا ہے جو آپ کے ہاتھوں میں سما سکتا ہے۔

سوئزرلینڈ کی کمپنی کی جانب سے تیار کیے گئے والے اس صابن کی ٹکیہ کی جسامت والے اس آلے کو ’’ڈولفی‘‘ کا نام دیا گیا ہے جو کسی بھی واش بیسن اور برتن کو واشنگ مشین میں تبدیل کرسکتا ہے۔ الٹراسونک ٹیکنالوجی استعمال کرنے والا یہ آلہ  کپڑوں کو گہرائی تک صاف کرتا ہے۔

کمپنی کے مطابق اگرچہ یہ بڑی واشنگ مشین کی طرح دھلائی نہیں کرتا کیونکہ بڑے پردوں اور چادروں کو دھونا اس کے بس میں نہیں لیکن یہ ایسے نازک اور قیمتی کپڑوں کے لیے زیادہ مؤثر ہے جو واشنگ مشین میں دھوتے ہوئے خراب ہوسکتے ہیں۔ کمپنی کے مطابق رواں سال اس کے ہزاروں نمونے بناکر فروخت کیے جائیں گے اور ایک کی قیمت 109 ڈالر یا قریباً 10 ہزار روپے ہے تاہم ابھی اس کی تیاری جاری ہے اور اس کے لیے 10 لاکھ ڈالر کی فنڈنگ شروع کی گئی ہے۔

کمپنی کے مطابق آلہ پانی میں جاتے ہی نیلا ہوجاتا ہے جس کا مطلب یہ ہے کہ وہ کام کررہا ہے اور الٹراسونک لہریں خارج کرتا ہے جس سے طاقتور بلبلے بنتے ہیں اور ان کی بھرمار سے کپڑے سے گردوغبار نکلتی ہے، اس طرح نچوڑے اور رگڑے بغیر صرف 30 منٹ میں کپڑے بالکل صاف ہوجاتے ہیں۔ یہ آلہ اتنا چھوٹا ہے کہ اسے ایک بیگ میں رکھ کر کہیں بھی لے جایا جاسکتا ہے اور ہر قسم کے کپڑے دھونے کے صلاحیت رکھتا ہے خواہ لباس سوتی ہویا ریشمی اور صفائی کرتے ہوئے 80 گنا کم توانائی استعمال کرتا ہے۔ کمپنی کے مطابق یہ سہولت ان افراد کے لیے ہے جو سفرکرتے ہیں اور کپڑوں کی دھلائی پر وقت اور رقم خرچ نہیں کرنا چاہتے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔