دفاعی نمائش ہنگامہ آرائی، بد ترین ٹریفک جام، لاکھوں شہری گھنٹوں پھنسے رہے

اسٹاف رپورٹر  بدھ 7 نومبر 2012
 ایم اے جناح روڈ پر ہنگامہ آرائی کے بعد سیکڑوں گاڑیاں ٹریفک جام میں پھنسی ہوئی ہیں، شہر کے مختلف علاقوں میں ٹریفک کی صورتحال ابتر رہی۔ فوٹو : ایکسپریس

ایم اے جناح روڈ پر ہنگامہ آرائی کے بعد سیکڑوں گاڑیاں ٹریفک جام میں پھنسی ہوئی ہیں، شہر کے مختلف علاقوں میں ٹریفک کی صورتحال ابتر رہی۔ فوٹو : ایکسپریس

کراچی: دفاعی ہتھیاروںکی نمائش اور نمائش چورنگی پر ہنگامہ آرائی کے باعث شہر کے بیشتر علاقوں میں بدترین ٹریفک جام رہا ،گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگ گئیں، شہریوںکوشدید مشکلا ت کا سامنا کرنا پڑا۔

متعدد گاڑیوں میں ایندھن ختم ہوگیا،ایمبولینسیں اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی گاڑیاں بھی ٹریفک جام میں پھنسی رہیں، مریضوں کو طبی امدا د تاخیر سے ملنے کے باعث ان کی حالت غیر ہوگئی، ٹریفک جام کے باعث شہریوں نے منٹوں کا سفر گھنٹوں میں طے کیا اورشام کو دفاتر سے گھر جانے والے شہری کئی گھنٹوں کی تاخیر سے گھر پہنچے، تفصیلات کے مطابق شہرکے بیشتر علاقوں آئی آئی چندریگر روڈ ، ایم اے جناح روڈ ، شارع لیاقت ، صدر ، نیو ایم اے جناح روڈ، شاہراہ قائدین، شارع فیصل ، گلشن اقبال ، غریب آباد ، یونیورسٹی روڈ ،شاہراہ پاکستان ،کورنگی روڈ، کالا پل ، ڈیفنس موڑ، ٹاور ،بزنس روڈ ، نیو پریڈی اسٹریٹ ، ریگل چوک ، تبت سینٹر ، نمائش چورنگی ، گرو مندر،لسبیلہ ، گولیمار چورنگی ، لیاقت آباد ڈاکخانہ ، جیل چورنگی ، حسن اسکوائر ، نیپا چورنگی، مسکن چورنگی ،میٹرو پول ، نرسری ، کار ساز ، ڈرگ روڈ اور ناتھاخان پل سمیت دیگر علاقوں میں بدترین ٹریفک جام رہا۔

جس کی وجہ سے شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا، بین الااقوامی نمائش آئیڈ یاز 2012 کے انعقاد کے سلسلے میں ٹریفک پولیس کی جانب سے یونیورسٹی روڈ پر پی آئی اے آڈیٹوریم کے قریب کنٹیرز رکھ کر سڑک ٹریفک کے لیے بند کردی گئی اور ٹریفک کو متبادل راستوں گلشن اقبال بلاک 16,15اوربلاک 17کی جانب موڑ دیا گیا جس کی وجہ سے ٹریفک کی روانی بری طرح متاثر ہو گئی اور یونیورسٹی روڈ سمیت گلشن اقبال ٹائون کے بلاک 16,15اوربلاک 17 کی گلیوں، نیشنل اسٹیڈ یم کے عقب اور ڈالمیا روڈ پر شدید ٹریفک جام ہو گیا ٹریفک جام ہونے کی وجہ سے شہریوں کو منٹوں کا سفر گھنٹوں میں طے کرنا پڑا جبکہ سوک سینٹر، سوئی سدرن گیس کمپنی آفس ، ڈی سی آفس اور نادرا آفس کا عملہ بھی تاخیر سے اپنے دفاتر پہنچا جبکہ ٹریفک جام میں اسکول کے بچے بھی پھنسے رہے اور وہ بھی سے تاخیر سے اپنے گھروں کو پہنچے ،دوسری جانب نمائش چورنگی کے قریب ہنگامہ آرائی کے باعث ایم اے جناح روڈ کو ٹریفک کے لیے بند کر دیا گیا۔

جس کی وجہ سے گرو مندر ، پٹیل پاڑا، لسبیلہ ، گولیمار چورنگی ، ناظم آباد چورنگی ، تین ہٹی، لیاقت آباد ڈاکخانہ سمیت دیگر علاقوں میں شدید ٹریفک جام رہا ، جبکہ ایم اے جناح روڈ کئی گھنٹوں تک بند رہنے کی وجہ سے ٹاور ، بولٹن مارکیٹ ، جامع کلاتھ ، آرام باغ، پاکستان چوک ، آئی آئی چندریگر روڈ ، شاہین کمپلیکس ، سلطان آباد ، فوارہ چوک ، میٹرو پول ، شارع فیصل ، نر سری بس اسٹاپ ، کلفٹن تین تلوار ، دو تلوار ، کورنگی روڈ ، کالا پل اور ڈیفنس موڑ سمیت دیگر علاقوں میں بد ترین ٹریفک جام رہا ، شہر کے مختلف علاقوں میں ٹریفک جام کے دوران ایمبولنسیں بھی پھنسی رہیں جس کی وجہ سے مریضوں کو طبی امداد بھی تاخیر سے ملی ، ٹریفک کے دوران بیشتر گاڑیوں میں سی این جی اور پیٹرول بھی ختم ہوگیا جس کی وجہ سے گاڑیاں سڑکوں پر ہی کھڑی ہو گئیں، دوسری جانب ٹریفک پولیس افسران کا کہنا ہے کہ شہر میں ٹریفک کی روانی بین الااقومی نمائش آئیڈیاز 2012 اور نمائش چورنگی پر ہونے والی ہنگامہ آرائی اور بعد ازاں نماز جنازہ کی وجہ سے متاثر ہوئی ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔