جدیدٹیکنالوجی کسانوں کی دہلیز تک پہنچائی جائے،معظم جتوئی

اے پی پی  اتوار 11 نومبر 2012
جدید ٹیکنولوجی سے چھوٹے کسان بھی بہتر پیداوار دے سکتے ہیں۔ فوٹو: رائٹرز/ فائل

جدید ٹیکنولوجی سے چھوٹے کسان بھی بہتر پیداوار دے سکتے ہیں۔ فوٹو: رائٹرز/ فائل

اسلام آ باد: وزیر مملکت برائے نیشنل فوڈ سیکیورٹی اینڈ ریسرچ سردار معظم جتوئی نے کہا ہے کہ زرعی پیداوار میں اضافے کیلیے جدید ٹیکنالوجی کو کسانوں کی دہلیز تک پہنچانا چاہیے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے قومی زرعی تحقیقی کونسل (این اے آرسی) میں زرعی ماہرین سے بریفنگ اور تجرباتی فیلڈ کے دورے کے دوران کیا۔ انہوں نے کہا کہ زرعی پیداوار میں اضافہ کرکے ملک کو ترقی وخوشحالی کی راہ پر گامزن کیا جاسکتا ہے۔ انہوں نے ماہرین پر زور دیا کہ ملک کو زراعت کی ترقی میں کامیابی کی منزل پر لے جانے کیلیے فصلوں اوردیگر شعبہ جات میں نئی نئی اقسام متعارف کرائیں تاکہ کاشتکار جدید علوم سے روشناس ہوکر ملک کی ترقی میں اپنا نمایاں کردار ادا کریں۔ ادارے کے چیئرمین نوید سلیمی اورڈائریکٹرجنرل شریف کلو نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ پی اے آر سی زراعت میں خودکفالت کی منزل کو پانے کیلیے مصروف عمل ہے۔

سردار معظم جتوئی نے زرعی ماہرین کی خدمات کو سراہا اورکہا کہ اگر کونسل کے ماہرین اسی لگن سے کام میںمصروف اور نتائج حاصل کرتے رہے تو یقیناً ملک زراعت کے میدان میں خوشحال ہوگا اورچھوٹے کاشتکاروں کو سہولتیں اور جدید ٹیکنالوجی بروقت ملے گی۔ وزیر مملکت نے مختلف لیبارٹریز اور فیلڈز میں تجرباتی ٹرائل دیکھے اوراطمینان کا اظہارکیا۔ اس موقع پر ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر شریف کلو، ڈاکٹر شاہد مسعود، ڈاکٹراحسان اختر، ڈاکٹر مجیب قاضی اور ڈاکٹراسلم بھی ان کے ہمراہ تھے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔