واٹر بورڈ :افسران کی ترقی کے معاملے نے دلچسپ شکل اختیار کرلی

اسٹاف رپورٹر  پير 12 نومبر 2012
 صورتحال پر متاثرہ افسران کے تحفظات، غیر جانبدارانہ کمیٹی کی تشکیل کا مطالبہ.  فوٹو : شاہد علی / ایکسپریس

صورتحال پر متاثرہ افسران کے تحفظات، غیر جانبدارانہ کمیٹی کی تشکیل کا مطالبہ. فوٹو : شاہد علی / ایکسپریس

کراچی: کراچی واٹراینڈ سیوریج بورڈ میں گریڈ 19سے گریڈ 20 کے افسران کی ترقی کے معاملے نے دلچسپ شکل اختیار کرلی ہے۔

واٹربورڈ میں اگلے گریڈ میں ترقی کے امیدوار افسران پر مشتمل ہی شعبہ جاتی ترقی کمیٹی قائم کردی گئی ہے یہ افسران خود اپنی ترقیوں کی منظوری دیں گے جس پر محکمے میں متاثر ہونے والے اعلیٰ افسران نے تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ اعلیٰ افسران کی ترقیوں کے لیے غیرجانبدارانہ ترقی کمیٹی قائم کی جائے، تفصیلات کے مطابق کراچی واٹراینڈ سیوریج بورڈ میں گریڈ19سے گریڈ 20 میں ترقی دینے کیلیے ڈپارٹمنٹل پروموشن کمیٹی قائم کی گئی ہے۔

اس کمیٹی کے سربراہ واٹربورڈ کے منیجنگ ڈائریکٹر مصباح الدین فرید ، ڈپٹی منیجنگ ڈائریکٹر ٹیکنیکل سروسز علی محمد پلیجو ، ڈپٹی منیجنگ ڈائریکٹر ہیومن ریسورسز محمد شکیل ، ڈپٹی منیجنگ ڈائریکٹر فنانس معراج الدین اور ڈپٹی منیجنگ ڈائریکٹر ریونیو(سابقہ)شامل ہیں، اس صورتحال کا سب سے دلچسپ پہلو یہ ہے کہ کمیٹی کے پانچ اراکین میں سے چار اراکین خود اگلے گریڈ میں ترقی کے امیدوار ہیں، ان امیدواروں میں ایم ڈی واٹربورڈ ، ڈی ایم ڈی ریونیو(سابقہ) محمود قادر ، ڈی ایم ڈی فنانس معراج الدیں اور ڈی ایم ڈی ایچ آر ڈی اے محمد شکیل شامل ہیں۔

ذرائع نے بتایا کہ اس صورت حال ایک اور دلچسپ اور حیرت انگیز پہلو یہ بھی ہے کمیٹی کے تمام اراکین 19گریڈ میں ہیں جو کہ 20گریڈ میں ترقیوں کی منظوری دیں گے جبکہ محکمے میں گریڈ 20 کے سینیئر افسران بھی موجود ہیں مگر ان افسران کو اس لیے کمیٹی میں شامل نہیں کیا گیا کیونکہ ان سے اپنی مرضی کا فیصلہ نہیں کرایا جاسکتا۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔