ایف بی آر میں کرپشن ختم کرنا بڑا چیلنج ہے، ہارون اختر

ارشاد انصاری  اتوار 5 جون 2016
سپر ٹیکس سے15 ارب ملے،آئندہ مالی سال بھی اتنا ہی ریونیو حاصل ہوگا، وزیراعظم کے مشیرریونیو۔ فوٹو: فائل

سپر ٹیکس سے15 ارب ملے،آئندہ مالی سال بھی اتنا ہی ریونیو حاصل ہوگا، وزیراعظم کے مشیرریونیو۔ فوٹو: فائل

اسلام آباد: وزیراعظم کے مشیر برائے ریونیو ہارون اختر نے کہاہے کہ فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) میں کرپشن وراثت میں ملی ہے جسے ختم کرنا بہت بڑا چیلنج ہے، البتہ ایف بی آر سے کرپشن کا خاتمہ ان کی اولین ترجیحات میں شامل ہے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز(ہفتہ)یہاں پی بلاک آڈیٹوریم میںوفاقی وزیر خزانہ اسحق ڈار کی پوسٹ بجٹ پریس کانفرنس کے بعد ایکسپریس سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ آپریشن ضرب عضب اور ٹی ڈی پیز کے لیے درکار فنڈز کیلیے عائد کردہ سپر ٹیکس سے رواں مالی سال کے دوران دس سے پندرہ ارب روپے کا ریونیو حاصل ہوا ہے اور آئندہ مالی سال کے دوران بھی سپر ٹیکس سے اتنا ہی ریونیو حاصل ہونے کی توقع ہے۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ فیڈرل بورڈ آف ریونیو اور اس کے ماتحت اداروں میں کرپشن انہیں وراثت میں ملی ہے اور ایف بی آر سے کرپشن ختم کرنا ایک بہت بڑا چیلنج ہے مگر اس کرپشن کا خاتمہ ان کی اولین ترجیحات میں شامل ہے۔  انہوں نے بتایا کہ ایف بی آر میں کرپشن میں بتدریج کمی ہورہی ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔