دورۂ پاکستان بنگلہ دیش نے اب آئندہ ماہ سیریز کا شوشہ چھوڑ دیا

اسپورٹس ڈیسک  جمعـء 14 دسمبر 2012
پاکستان نے دورے کی تازہ صورتحال جاننے کیلیے حال ہی میں ایک اور خط تحریر کیا ہے (سربراہ میڈیا کمیٹی) چیف ایگزیکٹیوکمیٹی میٹنگ کے دوران بھی معاملے پر تبادلہ خیال ہوا فوٹو: فائل

پاکستان نے دورے کی تازہ صورتحال جاننے کیلیے حال ہی میں ایک اور خط تحریر کیا ہے (سربراہ میڈیا کمیٹی) چیف ایگزیکٹیوکمیٹی میٹنگ کے دوران بھی معاملے پر تبادلہ خیال ہوا فوٹو: فائل

ڈھاکا: پاکستان نے بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ کو دورے کے حوالے سے ایک اور خط تحریر کر دیا۔

بی سی بی میڈیا کمیٹی چیئرمین جلال یونس کے مطابق ہم کئی معاملات پر کام کر رہے ہیں، اس وقت سیریز کی یقین دہانی ممکن نہیں، البتہ یہ بات طے ہے کہ دسمبر میں ٹور نہیں ہو سکے گا۔ دوسری جانب بی سی بی ذرائع نے ایک اور شوشا چھوڑتے ہوئے کہاکہ آئی سی سی سے کلیئرنس ملنے پر ٹیم کو7 سے 16 جنوری تک پاک سرزمین بھیجا جا سکتا ہے، ادھر ماہرین کے مطابق اس سیریز کا انعقاد ممکن دکھائی نہیں دیتا۔ تفصیلات کے مطابق4 سال سے ویران پاکستانی کرکٹ میدانوں کو آباد کرنے کیلیے بنگلہ دیشی ٹیم کی اپریل میں آمد طے تھی، مگر اسی ماہ کی19 تاریخ کو ڈفودل یونیورسٹی کے ٹیچر کھانڈیکر دیدارسلام اور سینئر سپریم کورٹ وکیل کمال حسین میازی نے ڈھاکا ہائی کورٹ میں سیریز کیخلاف رٹ پٹیشن دائر کر دی، عدالتی حکم پر ٹیم کو جانے سے روک دیا گیا۔

اس وقت سابق بی سی بی صدر مصطفیٰ کمال نے پاکستان کو یقین دلایا تھا کہ وہ دسمبر کے اواخر میں1یا2 میچز کھیلنے کیلیے اسکواڈ کو ضرور بھیجیں گے تاہم پی سی بی اب تک حتمی جواب کا منتظر ہے، بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ کی انتظامیہ میں حالیہ تبدیلی نے ٹور کا امکان بیحد معدوم کر دیا۔ ایڈہاک کمیٹی نے گذشتہ دنوں اپنی میٹنگ میں آئی سی سی سے پاکستانی سیکیورٹی صورتحال کی جائزہ رپورٹ طلب کرنے کا اعلان کیا تھا، اسی کی بنا پر دورے کا فیصلہ کیا جائیگا۔ بنگلہ دیشی بورڈ کی میڈیا کمیٹی کے سربراہ جلال یونس کے مطابق پاکستان نے ٹور کی تازہ صورتحال جاننے کیلیے حال ہی میں ایک اور خط تحریر کیا ہے۔

2

انھوں نے کہا کہ ہم اس وقت سیریز کے حوالے سے کئی معاملات پر کام کر رہے ہیں، مگر مجھے نہیں لگتا کہ دسمبر میں انعقاد ممکن ہو سکے گا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ2سے4 دسمبر تک دبئی میں منعقدہ آئی سی سی ایگزیکٹیو میٹنگ میں بی سی بی کے قائمقام سی ای او ناظم الدین چوہدری سے پاکستانی ہم منصب نے بھی سیریز کے حوالے سے استفسار کیا تھا، گرین شرٹس رواں ماہ کی22 تاریخ کو بھارت روانہ ہو رہے ہیں جہاں25 دسمبر سے6جنوری تک2 ٹوئنٹی20 اور 3 ون ڈے میچز کھیلے جائیں گے، بنگلہ دیشی بورڈ کے باخبر ذرائع کا کہنا ہے کہ اگر انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نے کلیئرنس دے دی تو ٹیم کو7 سے16جنوری تک مختصر سیریز کیلیے پاکستان بھیجا جا سکتا ہے۔

فی الوقت شیڈول میں یہی جگہ دستیاب ہے، دلچسپ بات یہ ہے کہ آئی سی سی اس سیریز کو دو بورڈز کا باہمی معاملہ قرار دے کر جان چھڑاتی رہی،ایسے میں یہی لگتا ہے کہ آئندہ ماہ بھی مقابلوں کا انعقاد ہونا دشوار ہے،20 یا22 جنوری کو پاکستانی ٹیم جنوبی افریقہ کے دورے پر روانہ ہوجائے گی۔ بنگلہ دیشی بورڈ18جنوری سے پریمیئر لیگ کا دوسرا ایڈیشن کرانا چاہتا ہے، اس کا مطلب یہ ہوا کہ اسے ایونٹ کے آغاز سے دو روز قبل تک ٹیم کی تمام انٹرنیشنل کمٹمنٹس مکمل کرانا ہوں گی۔ یاد رہے مارچ2009 میں سری لنکن ٹیم پر لاہور میں دہشت گردوں کے حملے نے پاکستان میں انٹرنیشنل کرکٹ پر فل اسٹاپ لگا دیا تھا، تب سے کوئی سائیڈ وہاں کھیلنے نہیں گئی،ٹیم کو اپنے ہوم میچز بھی نیوٹرل وینیوز پر کھیلنا پڑ رہے ہیں۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔