پیش امام کے قاتل نے حیدری بم دھماکے کا بھی اعتراف کرلیا

اسٹاف رپورٹر  بدھ 19 دسمبر 2012
پیش امام کو مخبری کے شبے میں مارا،تعلق قاری الیاس کشمیری گروپ سے ہے.  فوٹو: اے ایف پی/فائل

پیش امام کو مخبری کے شبے میں مارا،تعلق قاری الیاس کشمیری گروپ سے ہے. فوٹو: اے ایف پی/فائل

کراچی: نیو کراچی  میں مسجد  میں گھس کر پیش امام کو قتل کرنے والے گرفتار ملزم نے جوائنٹ انٹروگیشن ٹیم کے سامنے انکشاف کیا ہے کہ اس کا گروہ حیدری بم دھماکے میں ملوث ہے جبکہ اس کا تعلق قاری الیاس کاشمیری گروپ سے تھا۔

ملزم نے6 سے زائد افراد کو قتل کرنے بھی اعتراف کیا ہے ، ملزم بلال عرف کاشف عرف کلیم عرف جواد نے سی آئی ڈی گارڈن میں جوائنٹ انٹروگیشن ٹیم کے سامنے انکشاف کیا ہے کہ اس کے گروپ نے سفاری پارک کے قریب سے2 افراد کو اغوا کرکے65 لاکھ روپے تاوان وصول کیا تھا ، چند ماہ قبل نارتھ ناظم آباد تھانے کے قریب بوہری برادری کے علاقے میں موٹر سائیکل میں نصب بم دھماکا کیا تھا ، اس نے حیدری مارکیٹ کے قریب فائرنگ کرکے اصغر علی کو جبکہ نارتھ ناظم آباد میں شبیر نامی شخص کو فائرنگ کرنے علاوہ دیگر افراد کو بھی ٹارگٹ کلنگ کا نشانہ بنایا ہے۔

05

ملزم بلال عرف کاشف نے اعتراف کیا ہے کہ اس نے ملیر میں بوہری برادری سے تعلق رکھنے والوں کی گاڑی پر بھی فائرنگ کی تھی جس میں متعدد افراد زخمی ہوئے تھے۔ واردات سے قبل ملزم نے اپنی داڑھی چھوٹی کرائی تھی جبکہ اس نے تفتیش کے دوران یہ بھی انکشاف کیا ہے کہ وہ قتل کی اس واردات کو فرقہ وارانہ ظاہر کرنا چاہتا تھا،ملزم نے پیش امام کو مخبری کے شبے میں قتل کیا تھا ۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔