حماس پر اسرائیلی فوجیوں کے موبائل فونز ہیک کرنے کا الزام

ویب ڈیسک  جمعرات 12 جنوری 2017
فلسطینی تنظیم کسی بھی قسم کی فوجی تفصیلات حاصل کرنے میں ناکام رہی، اسرائیلی حکام۔ فوٹو: فائل

فلسطینی تنظیم کسی بھی قسم کی فوجی تفصیلات حاصل کرنے میں ناکام رہی، اسرائیلی حکام۔ فوٹو: فائل

مقبوضہ بیت المقدس: اسرائیلی فوج نے الزام عائد کیا ہے کہ فلسطینی تنظیم حماس نے نوجوان لڑکیوں کی تصاویر استعمال کر کے اسرائیلی فوجیوں کے موبائل فونز ہیک اور مائیکروفونز ہیک تک رسائی حاصل کر لی ہے۔

اسرائیلی فوج کی جانب سے جاری بیان کے مطابق حماس نے نوجوان لڑکیوں کی تصاویر اور عبرانی الفاظ استعمال کر کے درجنوں اسرائیلی فوجیوں کے موبائل فونز کو ہیک کیا تاہم فلسطینی تنظیم کسی بھی قسم کی فوجی تفصیلات حاصل کرنے میں ناکام رہی۔

اس خبر کو بھی پڑھیں: حماس نے اسرائیل کی جاسوسی کرنے والی ڈولفن پکڑ لی

اسرائیلی فوج کے ایک افسر نے بتایا کہ حماس نے فیس بک پر جعلی اکاؤنٹس بنا کر اسرائیلی فوجیوں کو پھنسایا، پہلے اسرائیلی فوجیوں کو جعلی اکاؤنٹس سے لڑکیوں کی تصاویر بھیجی گئیں اور پھر انہیں مسلسل رابطے میں رہنے اور ویڈیو چیٹ کے لئے ایک ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کا کہا گیا۔ اسرائیلی حکام کے مطابق لڑکیوں کے جھانسے میں آنے والے زیادہ تر نچلے درجے کے سپاہی تھے جس کی وجہ سے حماس کو اہم فوجی معلومات حاصل نہ ہو سکیں۔

اس خبر کو بھی پڑھیں: حماس کے رہ نما کا اکاؤنٹ ساتویں بار بند

اسرائیلی فوج کو حماس کی جانب سے ہیکنگ کا اس وقت معلوم ہوا جب فوجیوں کی مشکوک آن لائن سرگرمیوں کو رپورٹ کیا گیا، دوسری جانب حماس کے ترجمان نے اس حوالے سے بیان دینے سے گریز کیا ہے۔



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔