رابرٹ ہارورڈ نے امریکی قومی سلامتی کا مشیر بننے کی پیش کش ٹھکرادی

ویب ڈیسک  جمعـء 17 فروری 2017
رابرٹ ہارورڈ نے عہدہ ذاتی وجوہات کے باعث لینے سے انکار کیا، وائٹ ہاؤس۔ فوٹو : فائل

رابرٹ ہارورڈ نے عہدہ ذاتی وجوہات کے باعث لینے سے انکار کیا، وائٹ ہاؤس۔ فوٹو : فائل

واشنگٹن: ریٹائرڈ وائس ایڈمرل رابرٹ ہارورڈ نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی مشیر برائے قومی سلامتی امور بننے کی پیشکش ٹھکرا دی ہے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی مشکلات کم ہونے کے بجائے مزید بڑھتی جارہی ہیں، گزشتہ دنوں امریکی صدارتی مشیر برائے قومی سلامتی مائیکل فلن نے استعفیٰ دے دیا تھا تاہم اب ریٹائرڈ وائس ایڈمرل رابرٹ ہارورڈ نے بھی مشیر قومی سلامتی کا عہدہ سنبھالنے سے انکار کردیا ہے۔

اس خبر کو بھی پڑھیں : ٹرمپ کے مشیر برائے قومی سلامتی مائیکل فلن مستعفی

امریکی میڈیا کا کہنا ہے کہ ٹرمپ انتظامیہ کی جانب سے مائیکل فلن کے مستعفیٰ ہونے کے بعد ایڈمرل رابرٹ ہارورڈ کو مشیر قومی سلامتی کے عہدے کی پیشکش کی گئی تھی تاہم انہوں اس پیشکش کو ٹھکراتے ہوئے عہدہ لینے سے انکار کردیا ہے، وائٹ ہاؤس کے مطابق رابرٹ ہارورڈ نے عہدہ ذاتی وجوہات کے باعث لینے سے انکار کیا لیکن امریکی میڈیا کا کہنا ہے کہ رابرٹ ہارورڈ اپنی ٹیم لانا چاہتے تھے اور اسی وجہ سے انہوں نے اس عہدے پر کام کرنے سے انکار کیا ہے۔

اس خبر کو بھی پڑھیں : امریکی عدالتی نظام نے ملک کو خطرے میں ڈال دیا ہے

واضح رہے کہ چند روز قبل امریکی صدارتی مشیر برائے قومی سلامتی مائیکل فلن نے استعفی دے دیا تھا کیونکہ ان پر الزام تھا کہ انہوں نے ڈونلڈ ٹرمپ کے بطور صدر عہدہ سنبھالنے سے پہلے ہی روس پر عائد امریکی پابندیاں اٹھانے سے متعلق امریکہ میں تعینات روسی سفیر سے بات چیت شروع کردی تھی۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔