اسپاٹ فکسنگ کیس؛ ایف آئی اے کرکٹرز کے خلاف کارروائی روک دے، نجم سیٹھی

ویب ڈیسک  منگل 21 مارچ 2017
ایف آئی اے کو انکوائری کیلیے کوئی خط  نہیں لکھا جب کہ کرکٹرز کیخلاف کارروائی کرنا پی سی بی کا کام ہے،چیرمین پی ایس ایل، فوٹو؛ فائل

ایف آئی اے کو انکوائری کیلیے کوئی خط نہیں لکھا جب کہ کرکٹرز کیخلاف کارروائی کرنا پی سی بی کا کام ہے،چیرمین پی ایس ایل، فوٹو؛ فائل

 لاہور: چیرمین پاکستان سپر لیگ نجم سیٹھی نے ایف آئی اے سے معطل کرکٹرز کے خلاف کارروائی روکنے کی درخواست کرتے ہوئے کہا ہےکہ کھلاڑیوں کے خلاف کارروائی کرنا پی سی بی کا کام ہے۔

ایکسپریس نیوز کےمطابق نجم سیٹھی نے کہا کہ اسپاٹ فکسنگ میں ملوث قومی کرکٹرز کے خلاف انکوائری کررہے ہیں لہٰذا ایف آئی اے کرکٹرز کے خلاف کارروائی روک دے کیوں کہ ان کے خلاف کارروائی کرنا پاکستان کرکٹ بورڈ کا کام ہے۔

اس خبر کو بھی پڑھیں :اسپاٹ فکسنگ میں ملوث کھلاڑیوں کے نام ای سی ایل میں ڈالنے کا حکم

نجم سیٹھی کا کہنا تھا کہ ہم نے ایف آئی اے کو انکوائری کیلئے کوئی خط  نہیں لکھا خط میں صرف موبائل فون ڈیٹا کی تصدیق کی اپیل کی ہے جب کہ ایف آئی اے کو بکیز کے خلاف کارروائی کرنی چاہیے تاہم تحقیقات کے بعد ایف آئی اے کھلاڑیوں سے پوچھ گچھ کرے تو کوئی مسئلہ نہیں۔

اس خبر کو بھی پڑھیں :محمد عرفان اور خالد لطیف نے ایف آئی اے کو بیان ریکارڈ کرادیا

چیرمین پی ایس ایل نے مزید کہا کہ اسپاٹ فکسنگ کیس میں معطل کرکٹرز کے خلاف ٹھوس شواہد ہیں جو ہم ثابت کریں گے اور اس  کے لیے پاکستان کرکٹ بورڈ کا ٹربیونل جمعہ سے کارروائی شروع کرے گا۔

واضح رہے کہ وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار کی ہدایت کے بعد وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) نے اسپاٹ فکسنگ کیس میں معطل کرکٹرز کے خلاف کارروائی کا آغاز کردیا ہے جس کے تحت کرکٹرز کے بیانات ریکارڈ کیے گئے اور ان کے موبائل فون کا ڈیٹا بھی حاصل کیا گیا ہے جب کہ چوہدری نثار نے کرکٹرز کے نام ای سی ایل میں ڈالنے کا بھی حکم دیا ہے۔



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔