دھرنے کیخلاف ٹارگٹڈ آپریشن کا پلان تیارکرلیا، رحمن ملک

مانیٹرنگ ڈیسک  جمعرات 17 جنوری 2013
اطلاعات ہیں کہ دہشت گرد تنظیمیں طاہرالقادری پر حملہ کرسکتی ہیں،وزیر داخلہ کی گفتگو۔ فوٹو: ایکسپریس/فائل

اطلاعات ہیں کہ دہشت گرد تنظیمیں طاہرالقادری پر حملہ کرسکتی ہیں،وزیر داخلہ کی گفتگو۔ فوٹو: ایکسپریس/فائل

اسلام آباد: وزیر داخلہ رحمن ملک نے نے تحریک منہاج القرآن کے سربراہ طاہرالقادری کو وارننگ دی ہے کہ آج (جمعرات) رات تک دھرنا ختم کرکے واپس چلے جائیں۔

دھرنے پر ٹارگٹڈ آپریشن کا پلان تیارکرلیا ہے، دھرنے پرحملہ ہوسکتا ہے، طاہر القادری کی جان کوخطرہ ہے ،تمام سیاسی جماعتوں نے طاہرالقادری کے دھرنے کوغیر آئینی قرار دیا ہے، جنداللہ ، سیف اللہ باقری، تحریک طالبان اور دہشت گرد تنظیموں کی طرف سے طاہر القادری پر حملے کی اطلاعات ہیں، اسلام آباد میں گذشتہ رات گئے اسلام آباد میں پریس کانفرنس سے خطاب میں رحمان ملک نے کہا مارچ عالی شان گاڑیوں میں نہیں کیے جاتے بلکہ پیدل کیا جاتا ہے، انھوں نے کہا کوئی بچہ نمونیا یا سردی سے مرے گا تو ایف آر طاہر القادری کے خلاف ہو گی، کیونکہ میں اتنے بڑے مجمع کو سیکیورٹی نہیں دے سکتا، طاہرالقادری عوام کو ڈھال بنا رہے ہیں۔

10

طاہر القادری کو وارننگ دیتا ہوں کہ آج (جمعرات) رات تک دھرنا ختم کرکے واپس چلے جائیں، دھرنے پر حملہ ہو سکتا ہے، طاہر القادری کی جان کو خطرہ ہے، اپنی جان بچائیں اور واپس چلے جائیں ، طاہرالقادری کے کہنے پر اسمبلیاں تحلیل نہیں ہو سکتیں، انھوں نے یہ بھی وارننگ دی کہ دھرنے پر ٹارگٹڈ آپریشن کا پلان تیارکرلیا ہے، لال مسجد طرز کا آپریشن نہیں ہوگا، ضرورت پڑنے پر ایکشن کریں گے ، آپریشن نہیں، طاہر القادری کے ساتھ ٹی وی پر مناظرے کیلیے تیار ہوں ۔طاہر القادری40 ، پچاس منٹ کیلیے ایف6 کے علاقے میں کہاں گئے تھے؟۔ قادری نے کہا بھی توناکے نہیں کھولوں گا، طاہر القادری دھرنا ختم کر دیں، میری بات مانیں اور اپنی جان بچائیں۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔