کیماڑی سے مغوی بچہ بازیاب، اغوا میں سابق کرائے دار ملوث نکلے

اسٹاف رپورٹر  جمعـء 18 جنوری 2013
بازیاب ہونیوالا عزیز۔ فوٹو: ایکسپریس

بازیاب ہونیوالا عزیز۔ فوٹو: ایکسپریس

کراچی: کیماڑی سے بازیاب کرائے جانے والے 10سالہ بچے کے اغوا میں سابقہ کرائے دار ملوث تھے۔

ملزمان نے کچھ عرصے قبل ان ہی کے ایک مکان میں رہائش اختیار کی تھی اور مغوی بچے کو بھی اسی علاقے میں رکھا تھا،تفصیلات کے مطابق بدھ کو کیماڑی عمر خان روڈ سے بازیاب کیے جانے والے 10سالہ بچے عزیز ولد محمد اقبال کے اغوا میں سابقہ کرایہ دار ملوث تھے،مغوی بچے کے چچا اسد نے ایکسپریس سے گفتگو میں بتا یا کہ کیماڑی مسان چوک سبحان اﷲ مسجد کے قریب ان کے کئی مکانات ہیں جن میں مختلف کرایہ دار رہائش پذیر ہیں جبکہ وہ خود میڈیکل کے شعبے سے وابستہ ہیں، مغوی بچے کا والد اور ان کا بھائی گذری میں رشتے دار کے ہوٹل پر ملازمت کرتا ہے۔

انھوں نے بتایا کہ 8 ماہ قبل انھوں نے اپنا ایک مکان پشاور سے کراچی آنے والی ایک فیملی کو کرائے پر دیا تھا اور کرایہ داروں نے مکان ایک ماہ بعد ہی خالی کر دیا تھا، میرے بھتیجے عزیر کو 10جنوری کو مسان چوک سے اغوا کیا گیا تھا اور اغوا کاروں نے بچے کی بازیابی کے لیے20 لاکھ روپے تاوان طلب کیا تھا،چند روز بعد ملزمان کی تلاش میں پولیس نے ایک مقام پر چھاپہ مارا تھا،جس کی اطلاع ملزمان تک پہنچ گئی جس پر ملزمان نے مشتعل ہوکر تاوان کی رقم دگنی کرکے 20 لاکھ سے بڑھا کر40 لاکھ روپے کردی تھی۔

بعدازاں ملزمان 5 لاکھ روپے تاوان کی رقم لینے پر راضی ہو گئے تھے، اسی دوران بدھ کو اینٹی وائیلنٹ کرائم سیل ، سی پی ایل سی اور جیکسن پولیس نے کیماڑی عمر خان روڈ عثمان مسجد کے قریب کارروائی کرتے ہوئے 10سالہ بچے عزیز ولد محمد اقبال کو بحفاظت بازیاب کرالیا جبکہ ملزمان گنجان آباد علاقے میں فرار ہوگئے، اینٹی وائیلنٹ کرائم سیل کے اے ایس آئی محمد وسیم نے ایکسپریس کو بتایا کہ بازیاب بچے نے اغوا کاروں کو شناخت کر لیا تھا اور انھیں اچھی طرح علم تھا کہ اگر وہ بچے کو رہا کریں گے تو بچہ اپنے گھر والوں کو بتادے گا۔

انھوں نے بتایا کہ اغوا کاروں نے جس مقام سے بچے کو اغوا کیا تھا اس مقام سے ڈیڑھ کلومیٹر دور ایک مکان میں چھپا کر رکھا تھا اور اغوا کاروں نے وہ مکان بھی کرائے پر حاصل کیا تھا،کیماڑی کے مالک مکان اپنے مکان کرائے پر دیتے وقت کسی قسم کی دستاویزات طلب نہیں کرتے جس کی وجہ سے ان کے مکان میں اغوا کی واردات ہوئی، پولیس اغوا کاروں کی گرفتاری کیلیے چھا پے مار رہی ہے اور جلد اغوا کار گرفتار ہوجائیں گے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔