آڈیٹرجنرل کےاعتراضات، بلدیہ عظمیٰ میں 5افسران کو اظہار وجوہ کے نوٹس جاری

اسٹاف رپورٹر  پير 21 جنوری 2013
رپورٹ سندھ پبلک اکائونٹس کمیٹی کوپیش،آڈیٹرجنرل کےاعتراضات کاجواب نہ دیاگیاتواعلیٰ افسران کیخلاف سخت کارروائی متوقع ہے. فوٹو: آن لائن

رپورٹ سندھ پبلک اکائونٹس کمیٹی کوپیش،آڈیٹرجنرل کےاعتراضات کاجواب نہ دیاگیاتواعلیٰ افسران کیخلاف سخت کارروائی متوقع ہے. فوٹو: آن لائن

کراچی: بلدیہ عظمیٰ کی انتظامیہ آڈیٹر جنرل کی طرف سے اٹھائے جانیوالے اعتراضات کا جواب تیار کرنے میں ناکام ہوگئی اور اس سلسلے میں ادارے کے5 افسران کو اظہار وجوہ کے نوٹس جاری کردیے گئے ہیں۔

ان افسران میں سینئر ڈائریکٹر میڈیکل ڈائریکٹر اترداس سجنانی ، ڈائریکٹر پارکس مشتاق عبداﷲ ، ملیر بند کے ایگزیکٹو انجینئر اور محکمہ زراعت کے دو اکاؤنٹینٹ شامل ہیں ان دو اکاؤنٹینٹ کے بارے میں سیکریٹری زراعت کو خط تحریر کیا گیا ہے ان 5افسران پر الزام ہے کہ آڈیٹرجنرل پاکستان نے بلدیہ عظمیٰ میں کروڑوں روپے کی بے قاعدگیوں کے جو انکشافات کیے تھے اس حوالے سے سامنے آنے والے اعتراضات کا جواب تیار کرنے میں یہ افسران ناکام رہے ہیں اور اس سلسلے میں ان کو متعدد بار کہا گیا کہ وہ اعتراضات کے جواب جمع کرائیں مگر یہ افسران ایسا کرنے میں ناکام رہے۔

ذرائع نے بتایا کہ بلدیہ عظمیٰ کی انتظامیہ آڈیٹرجنرل پاکستان تیار کردہ رپورٹ سے شدید گھبراہٹ کا شکار ہے وہ کسی طور بھی اس بحرانی کیفیت سے اپنے آپ کو نہیں نکال پارہے ہیں کیونکہ یہ رپورٹ سندھ پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کو پیش کردی گئی ہے گزشتہ ایک اجلاس میں بلدیہ عظمیٰ کی انتظامیہ نے مہلت طلب کرلی تھی تاہم اب دوبارہ پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے اجلاس میں اگر بلدیہ عظمیٰ اعتراضات کا موثر جواب دینے میں ناکام رہی تو بلدیہ عظمیٰ کے اعلیٰ افسران کے خلاف سخت کارروائی متوقع ہے ذرائع نے بتایا کہ بلدیہ عظمیٰ کی انتظامیہ نے اپنے آپ کو بچانے کیلیے سینئر ڈائریکٹر انٹرنل آڈٹ منصور قاضی کو معطل بھی کردیا ہے تاکہ پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کو یہ باور کرایا جاسکے کہ ہم نے کوتاہی برتنے پر ذمے دار افسرکیخلاف کارروائی کردی ہے۔

6

ذرائع کا کہنا ہے کہ جس افسر کو معطل کیا گیا ہے کہ دلچسپ اور حیرت انگیز بات یہ ہے کہ اس افسر کا اس پورے معاملے سے کوئی تعلق نہیں ہے جبکہ جس دوران یہ اعتراضات لگائے گئے تھے وہ وہاں تعینات بھی نہیں تھا اور اس افسر کا شمار بھی ادارے کے چند ایماندار افسران میں ہوتا ہے تاہم اس کے باوجود کرپٹ افسران کو بچانے کے لیے ایک ایماندار اور کمزور افسرکو قربانی کی بھینٹ چڑھادیا گیا ہے اس افسر کو معطل کرنے پر ادارے میں ہر سطح پر افسوس کا اظہار کیا گیا تھا کہ بلدیہ عظمیٰ میں کرپٹ افسران کے خلاف تو کوئی کارروائی نہیں کی جاتی مگر ایماندار افسران کو معطل کردیا جاتا ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔