واٹر بورڈ، چیف انجینئر کی ترقی کا حکمنامہ واپس لے لیا گیا

اسٹاف رپورٹر  منگل 22 جنوری 2013
 قانون کے تحت ادارے کی جو اسامیاں سندھ حکومت کی ہیں ان پر واٹربورڈ کے افسران کی ترقی نہیں ہوسکتی، سینئر افسران. فوٹو: فائل

قانون کے تحت ادارے کی جو اسامیاں سندھ حکومت کی ہیں ان پر واٹربورڈ کے افسران کی ترقی نہیں ہوسکتی، سینئر افسران. فوٹو: فائل

کراچی:  کراچی واٹراینڈ سیوریج بورڈ کی انتظامیہ نے ادارے کے چیف انجینئر فہیم زیدی کی گریڈ 19سے 20 گریڈ میں ترقی کو خلاف ضابطہ تسلیم کرتے ہوئے ان کی ترقی کا حکمنامہ واپس لے لیا ہے۔

یہ حکمنامہ ادارے کے سینئر انجینئر مشکورالحسنین کے شدید احتجاج کے بعد واپس لیا گیا ہے، دوسری طرف ادارے کے سینئر افسران نے اس بات پر بھی شدید احتجاج کیا ہے کہ ادارے کے منیجنگ ڈائریکٹر مصباح الدین فرید نے اپنی ترقی ادارے کے منیجنگ ڈائریکٹر کے عہدے پر کی ہے جبکہ یہ اسامی سندھ حکومت کی ہے جس پر واٹربورڈ کے کسی آفیسر کی ترقی نہیں ہوسکتی ہے، افسران کا کہنا ہے کہ مصباح الدین فرید نے اپنی اگلے گریڈ میں ترقی کے لیے منیجنگ ڈائریکٹر کی اسامی کا چنائو کیا ہے۔

جس سے ان کی ترقی بھی مشکوک ہوگئی ہے جو کہ سندھ حکومت کے ایک حکمنامہ سے کسی بھی وقت منسوخ ہوسکتی ہے، ان افسران کا کہنا ہے کہ قانون کے تحت ادارے کی جو اسامیاں سندھ حکومت کی ہیں ان پر واٹربورڈ کے افسران کی ترقی نہیں ہوسکتی، افسران نے سندھ حکومت ، اینٹی کرپشن اور نیب سے اپیل کی ہے کہ وہ اس معاملے کا نوٹس لیں اور ادارے میں ہونے والی خلاف ضابطہ ترقیوں کی تحقیقات کرائیں، ذرائع نے بھی بتایا کہ فہیم زیدی کی تنزلی کے لیے بھرپور احتجاج کرنے پر ادارے کے افسران نے مشکور الحسنین کو زبردست خراج تحسین پیش کیا اور ان سے مطالبہ کیا ہے انھوں نے اس خلاف ضابطہ عمل پر جس طرح احتجاج کیا ہے۔

اسی طرح وہ ایم ڈی کی ترقی پر احتجاج کریں، واضح رہے کہ واٹربورڈ کی انتظامیہ نے ادارے کے چیف انجینئر فہیم زیدی کی گریڈ19سے گریڈ20 میں خلاف ضابطہ ترقی کرتے ہوئے ان کی تنخواہ ڈی ایم ڈی پلاننگ کے عہدے سے جاری کرنے کا حکم نامہ جاری کردیا تھا جبکہ اس عہدے سے تنخواہ لینے والے سینئر انجینئر مشکورالحسنین کی تنخواہ پروجیکٹ ڈائریکٹر کے فور کے عہدے سے لینے کے احکامات جاری کیے پروجیکٹ ڈائریکٹر کے فور کی اسامی بجٹ میں نہیں۔

جس کے باعث اس بات کا خدشہ تھا کہ کچھ عرصے بعد مشکورالحسنین کو تنخواہ کی ادائیگی بھی بند ہوجائے گی، اس صورتحال پر ادارے کے سینیئر افسران نے بھی شدید اعتراض اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے موقف اختیار کیا تھا کہ صرف فہیم زیدی کو نوازنے کے لیے مشکورالحسنین جیسے سینئر آفیسر کی اس طرح تذلیل کرنا انتہائی افسوسناک اور قابل شرم عمل ہے،مشکورالحسنین نے ہر دور میں ادارے کے ایم ڈی مصباح الدیں فرید کا ساتھ دیا حتیٰ کہ مشکورالحسنین کے بارے میں یہ بھی مشہور ہے کہ وہ ادارے کے ایم ڈی کی انگریزی میں تمام خط وخطابت بھی کرتے ہیں۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔