گلبرگ پولیس کا منیبہ اسکول محکمہ تعلیم کے حوالے کرنے سے انکار

اسٹاف رپورٹر  بدھ 23 جنوری 2013
پولیس نجی پارٹی کیخلاف ایف آئی آردرج کرنے کوتیار نہیں،سرکاری افسر، طلبا کا تعلیمی سلسلے کی بحالی کیلیے مظاہرہ.  فوٹو: اے ایف پی/ فائل

پولیس نجی پارٹی کیخلاف ایف آئی آردرج کرنے کوتیار نہیں،سرکاری افسر، طلبا کا تعلیمی سلسلے کی بحالی کیلیے مظاہرہ. فوٹو: اے ایف پی/ فائل

کراچی: گلبرگ پولیس نے منیبہ گورنمنٹ بوائزسیکنڈری اسکول کی عمارت صوبائی محکمہ تعلیم کے حوالے کرنے سے انکار کردیا۔

ساتھ ہی محکمہ تعلیم کے متعلقہ افسران کی جانب سے مسلسل اصرار کے باوجود پولیس نے نجی پارٹی کیخلاف ایف آئی آردرج کرنے سے بھی انکارکردیا ہے جس کے سبب اسکول میں ساتویں روز بھی تدریسی سلسلہ شروع نہیں ہوسکا اورامتحانات کے قریب کراچی کے غریب طلبہ گذشتہ ایک ہفتے سے تعلیم سے محروم ہیں ،اسکول کے طلبہ نے تعلیم سے محروم رکھے جانے پر ساتویں روز بھی منیبہ گورنمنٹ اسکول کے سامنے مظاہرہ کیا،اسکول کی بحالی اور تدریسی سلسلہ دوبارہ شروع کرنے کا مطالبہ کیا۔

اس موقع پر طلبہ کی ایک بڑی تعداد موجود تھی جو اسکول کی عمارت محکمہ تعلیم کے حوالے کرنے اور اس میں تدریسی سلسلہ شروع کرنے کیلیے نعرے لگارہی تھی،واضح رہے کہ یہ طلبہ ایک ہفتے سے تعلیم سے محروم ہیں ،طلبہ نے رواں ہفتے میں مسلسل دوسرے روز اپنے تعلیمی سلسلے کی بحالی کیلیے مظاہرہ کیا،تاہم صوبائی وزیرتعلیم پیرمظہرالحق سمیت تا حال اعلیٰ حکام کی جانب سے اس معاملے کاکوئی نوٹس نہیں لیا گیا۔

3

دوسری جانب گلبرگ پولیس نے صوبائی محکمہ تعلیم کومنیبہ گورنمنٹ اسکول کی عمارت حوالے کرنے کے معاملے پر حیلے بہانے شروع کردیے ہیں ، محکمہ تعلیم کے ایک افسر نے ’’ایکسپریس‘‘کو بتایا کہ گلبرگ پولیس نجی پارٹی کے خلاف ایف آئی آردرج کرنے کوتیار نہیں ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ محکمہ اپنے ان افسران کے خلاف ایف آئی آردرج کرائے جنھوں نے منیبہ گورنمنٹ اسکول کی عمارت نجی پارٹی کے حوالے کی تھی،ایک افسر نے بتا یا کہ پولیس سے کئی بارعمارت کا قبضہ مانگا گیا تاکہ اسکول میں دوبارہ تدریسی سلسلہ شروع کیا جائے تاہم پولیس محکمے کواسکول کی عمارت حوالے نہیں کررہی ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔