ایل پی جی درآمد کا 25ارب ڈالر کا منصوبہ کھٹائی میں پڑگیا

آئی این پی  بدھ 23 جنوری 2013
نیلامی کے عمل میں قواعد وضوابط کی خلاف ورزیاں، معاملہ ای سی سی میں پیش کرنے کا فیصلہ فوٹو: فائل

نیلامی کے عمل میں قواعد وضوابط کی خلاف ورزیاں، معاملہ ای سی سی میں پیش کرنے کا فیصلہ فوٹو: فائل

اسلام آباد: ملک میں گیس کی قلت پر قابو پانے کے لیے ایل پی جی درآمدکرنے کا 25ارب ڈالر مالیت کا منصوبہ نیلامی کے عمل میں قواعد وضوابط کی خلاف ورزیوں پر کھٹائی میں پڑگیا۔

کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی کی جانب سے مشیر پٹرولیم ڈاکٹر عاصم حسین کی سربراہی میں قائم ذیلی کمیٹی کسی نتیجے پر نہ پہنچ سکی جس کی وجہ سے معاملہ ای سی سی میں پیش کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔

پٹرولیم سیکٹر کے ذرائع کے مطابق ایل این جی کی درآمد کے حوالے سے25ارب ڈالر کے منصوبے اورایل پی جی ایئرمکس کے منصوبے پر ای سی سی کی جانب سے مشیر پٹرولیم و قدرتی وسائل کی سربراہی میں ای سی سی کی ذیلی کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں ایل این جی کی درآمد کے حوالے سے نیلامی کے عمل کا جائزہ لیا گیا توبتایاگیا کہ نیلامی میں تین کمپنیوں نے دلچسپی لینے کیلیے کاغذات جمع کرائے تھے اور9جنوری کو طے شدہ وقت پرنیلامی کیلیے ٹینڈرکھولے گئے تھے۔

13

پی جی پی ایل نے مقررہ وقت کے بعد اپنی بولی جمع کرائی جبکہ جی ای آئی نامی کمپنی نے مقررہ فیس سے کم رقم جمع کرائی تھی۔صورتحال کا تفصیلی جائزہ لیاگیااورفیصلہ کیاگیا کہ نیلامی کے عمل کوشفاف بنانے کیلیے اس معاملے کوای سی سی کے سامنے پیش کیا جائے اور وہ ہی اس کا فیصلہ کرے گی۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔