پاناما نے تائیوان سے سفارتی تعلقات منقطع کرکے چین سے استوار کرلیے

ویب ڈیسک  منگل 13 جون 2017
پاناما کی وزیر خارجہ ازابیل بیجنگ میں مشترکہ پریس بریفنگ میں چینی ہم منصب وانگ ڈی سے مصافحہ کررہی ہیں۔ فوٹو: اے ایف پی

پاناما کی وزیر خارجہ ازابیل بیجنگ میں مشترکہ پریس بریفنگ میں چینی ہم منصب وانگ ڈی سے مصافحہ کررہی ہیں۔ فوٹو: اے ایف پی

پاناما سٹی: وسطی امریکی ملک پاناما نے تائیوان سے اپنے دیرینہ سفارتی تعلقات منقطع کرکے چین سے استوار کرلیے۔

پاناما حکومت نے اپنے جاری کردہ بیان میں کہا ہے کہ وہ ’صرف ایک چین‘ کو تسلیم کرتی ہے اور تائیوان کو چین کا حصہ قرار دیتی ہے۔ دوسری جانب تائیوان نے پاناما کے اس فیصلے پر افسوس اور غصے کا اظہار کرتے ہوئے پاناما پر ڈرانے دھمکانے کا الزام عائد کیا۔

واضح رہے کہ چینی حکومت تائیوان کو اپنا صوبہ قرار دیتی ہے اور تائیوان کو تسلیم کرنے والے کسی بھی ملک سے سفارتی تعلقات قائم نہیں کرتی۔ اسی لیے چند ممالک کے ہی چین کی بجائے تائیوان سے تعلقات قائم ہیں۔

پاناما نے اس فیصلے کی کوئی وجہ نہیں بتائی تاہم چینی کمپنیاں پاناما میں متعدد بندرگاہیں تعمیر کررہی ہیں، جس کے باعث قرینِ قیاس یہی ہے کہ معاشی فوائد اس فیصلے کا سبب ہوسکتے ہیں۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔