جرمنی میں موجود طیارہ اب بھی پی آئی اے کی ملکیت ہے، ترجمان پی آئی اے

ویب ڈیسک  بدھ 13 ستمبر 2017
جرمن میوزیم میں طیارے کا رنگ تبدیل کرنے کا کام شروع کیاگیا ہے، ذرائع۔ فوٹو: فائل

جرمن میوزیم میں طیارے کا رنگ تبدیل کرنے کا کام شروع کیاگیا ہے، ذرائع۔ فوٹو: فائل

 کراچی: جرمنی میں موجود طیارہ اب بھی پی آئی اے کی ملکیت ہے جب کہ اے تھری ٹین ماڈل کا طیارہ ایف آئی اے کے زیر تفتیش ہے۔

ترجمان پی آئی اے کا کہنا ہے کہ جرمنی میں موجود طیارہ کسی میوزیم کو فروخت نہیں کیا گیا یہ اب بھی پی آئی اے کی ملکیت ہے ، کچھ قانونی تقاضے ہیں جس کے بعد معاملے کا تصفیہ کرلیا جائے گا، اے تھری ٹین ماڈل کا طیارہ ایف آئی اے کے زیر تفتیش ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ پی آئی اے کا جرمنی میں موجود طیارہ گراؤنڈ کرکے فضائی بیڑے سے باہر کردیا گیا تھا، مذکورہ اور 4 دیگر طیاروں پر پی آئی انتظامیہ نے رپورٹ دی تھی کہ اڑان کے قابل نہیں  جب کہ ائیر بس 310 طیارہ سابق جرمن نژاد سی ای او برن ہلڈن برانڈ کی ہدایات پر جرمنی پہنچایا گیا تھا۔

اس خبر کو بھی پڑھیں : پی آئی اے کا جہاز جرمن ایم ڈی لے گیا، حکومت کا اعتراف

ذرائع کے مطابق جرمن میوزیم میں طیارے کا رنگ تبدیل کرنے کا کام شروع کیا گیا جب کہ ایک اسرائیلی فلم میں پی آئی اے کے طیارے کی عکس بندی کا معاملہ بھی منظر عام پر آیا، طیارہ بیرون ملک فروخت معاملے  پر برن ہلڈن برانڈ کے خلاف تحقیقات شروع کی گئی، قومی ائیر لائن کے جرمن نژاد سی ای او پر طیارہ سستے داموں فروخت کرنے سمیت دیگرمتفرق الزاما ت بھی تھے، مسلسل تنازعات کے بعد برن ہلڈ ن برانڈ کو پی آئی اے سے فارغ کردیا گیا اور ان کا نام ای سی ایل میں بھی ڈالا گیا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ای سی ایل سے نام خارج ہونے کے بعد جرمن سی ای او واپس اپنے ملک چلے گئے، ایف آئی اے جرمنی کے میوزیم کو طیارہ سونپنے کے معاملے کی تحقیقات کررہی ہے، ائیر بس 310 طیارہ اس وقت جرمنی کے شہر لپ زیگ میں موجود ہے۔



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔