دبئی میں گالی دینے پر 57 ہزار روپے جرمانہ مقرر

ویب ڈیسک  بدھ 15 نومبر 2017
دبئی میں جرمانے کے نئے قوانین کا نفاذ کیا گیا ہے۔ (فوٹو: انٹرنیٹ)

دبئی میں جرمانے کے نئے قوانین کا نفاذ کیا گیا ہے۔ (فوٹو: انٹرنیٹ)

دبئی: دبئی میں گالی دینے، چیک باؤنس ہونے اور ہوٹل کے کمرے کا کرایہ ادا نہ کرنے پر جرمانہ ادا کرنا پڑے گا۔

اماراتی میڈیا کے مطابق دبئی حکومت نے عدلیہ پر مقدمات کا بوجھ کم کرنے کےلیے کم سنگین جرائم پر پولیس اور فیملی پراسیکیوشن ونگز کو جرمانے کے اختیارات تفویض کردیئے ہیں۔ دبئی کے اٹارنی جنرل عصام عیسی کے جاری کردہ حکم نامے کے تحت اب پولیس اور فیملی پراسیکیوشن ونگز جرمانہ کرنے کے مجاز ہوں گے۔ نئے قوانین کا مقصد دبئی آنے والے سیاحوں کو عدالتی کارروائیوں کی وجہ ہونے والی  تاخیر سے بچانا ہے۔

نئے قوانین کے تحت گالی دینے والے شخص کو بھی 2 ہزار درہم جرمانہ ادا کرنا پڑے گا جو پاکستانی روپوں میں 57 ہزار روپے بنتا ہے جب کہ ہوٹل میں کمرے کا کرایہ ادا نہ کرنے پر 50 ہزار درہم تک جرمانہ کیا جاسکے گا۔

البتہ اس خبر میں یہ واضح نہیں کیا گیا کہ دبئی حکومت کے مطابق کس چیز کو ’’گالی‘‘ میں شمار کیا گیا ہے یا پھر گالی کی تشریح کےلیے بھی وہاں کی عدالت سے رجوع کرنا پڑے گا۔

یہ خبر بھی پڑھیں: دبئی سے لندن اب 4 گھنٹے کا سفر

اسی طرح خودکشی کی ناکام کوشش کرنے پر ایک ہزار درہم اور فون کے ذریعے تنگ کرنے پر 5 ہزار درہم تک جرمانہ ہوگا جب کہ چیک باؤنس ہونے کی صورت میں 2 ہزار سے 50 ہزار درہم تک جرمانہ ادا کرنا پڑے گا۔



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔