تازہ جھڑپ میں آرمینیا کے 3 فوجی ہلاک اور آذربائیجان کے 2 اہلکار زخمی

ویب ڈیسک  بدھ 28 جولائ 2021
دونوں ممالک کا ایک دوسرے پر گولہ باری اور فائرنگ کا الزام۔ فوٹو: فائل

دونوں ممالک کا ایک دوسرے پر گولہ باری اور فائرنگ کا الزام۔ فوٹو: فائل

نگورنو کاراباخ: آرمینیا کی فوج نے الزام عائد کیا ہے کہ آذربائیجان کی فوج کی بلاجواز اشتعال انگیزی میں ہمارے 3 اہلکار ہلاک اور 2 زخمی ہوگئے۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق آذربائیجان اور آرمینیا کے درمیان متنازع علاقے کے قبضے کے لیے ہونے والی ہلاکت خیز جنگ کے بعد اب بھی جھڑپوں کا سلسلہ جاری ہے۔ تازہ جھڑپ میں آرمینیا کے 3 فوجی اہلکار ہلاک اور آذربائیجان کے دو فوجی زخمی ہوگئے۔

دونوں ممالک تازہ جھڑپ میں اشتعال انگیزی اور فائرنگ میں پہل کرنے کا الزام ایک دوسرے پر عائد کر رہے ہیں۔

یہ خبر پڑھیں : آرمینیا کے ہتھیار ڈالنے پر آذربائیجان میں جشن، نگورنو کاراباخ میں روسی فوج تعینات 

آرمینیا کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ اسٹاک کے ایک گاؤں کی سرحدی خلاف ورزی کرتے ہوئے آذربائیجان کی فوج نے پیش قدمی کی اور روکنے پر فائرنگ کردی جس میں ہمارے 3 فوجی ہلاک اور 2 زخمی ہوگئے۔

دوسری جانب آذربائیجان کی وزارت دفاع کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ کلباجار ضلع میں آرمینیا کی فوج نے بلاجواز ہماری سرزمین کی جانب گولیاں برسائیں جس میں دو فوجی اہلکار زخمی ہوگئے۔ ہماری جنگ بندی کی پاسداری کو کمزوری نہ سمجھا جائے۔

یہ خبر بھی پڑھیں : آرمینیا اور آذربائیجان کا ’انسان دوستی‘ کے تحت جنگ بندی کا اعلان 

واضح رہے کہ گزشتہ برس متنازع علاقے نگورنو کاراباخ کے قبضے کیلیے 6 ہفتوں تک جاری رہنے والی جنگ روس کی مداخلت کے باعث نومبر میں ایک معاہدے کے تحت آرمینیا کے ہتھیار ڈالنے پر ختم ہوگئی تھی۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔