پاکستان سائبر سیکیورٹی کے حوالے سے دنیا کے 10 بدترین ممالک میں شامل

ویب ڈیسک  بدھ 13 فروری 2019
پاکستان میں تقریباً 25 فیصد صارفین کے موبائل فون وائرس کا نشانہ بن چکے ہیں، کیسپر اسکائے۔ فوٹو:فائل

پاکستان میں تقریباً 25 فیصد صارفین کے موبائل فون وائرس کا نشانہ بن چکے ہیں، کیسپر اسکائے۔ فوٹو:فائل

ماسکو: روسی سائبر سیکیورٹی کے ادارے کیسپر اسکائے نے سائبر سیکیورٹی کے حوالے سے پاکستان کو دنیا کے 10 بدترین ممالک میں شامل کرلیا ہے۔

روسی سائبر سیکیورٹی کے ادارے کیسپر اسکائے نے دنیا بھر کے 10 ایسے ممالک کی فہرست جاری کی ہے جہاں سائبر سیکیورٹی سب سے کم ہے، ان ممالک میں انٹرنیٹ صارفین سب سے زیادہ غیر محفوظ ہیں۔

تحقیق میں دنیا کے صرف 60 ممالک کو شامل کیا گیا کیونکہ ان کے اعدادوشمار مکمل اور باآسانی دستیاب ہیں، ادارے نے 10 ایسے ممالک کی فہرست جاری کی ہے جن میں انٹرنیٹ صارفین کا ڈیٹا چاہے موبائل، کمپیوٹر یا لیپ ٹاپ سے استعمال کیا جائے، سب سے زیادہ غیر محفوظ ہیں۔

فہرست میں بنگلادیش سرفہرست ہے، جہاں تقریباً 36 فیصد انٹرنیٹ صارفین پر سائبر حملے ہوئے، دوسرے نمبر پر نائیجیریا رہا، جہاں 28.5 فیصد صارفین پر سائبر حملے ہوئے، ایران 28.07 فیصد کے ساتھ تیسرے، تنزانیا 28 فیصد کے ساتھ چوتھے، چین 25.6 فیصد کے ساتھ پانچویں اور بھارت 25.2 کے ساتھ چھٹے نمبر پر رہا۔

روسی سائبر سیکیورٹی کے ادارے کی فہرست کے مطابق سائبر حملوں سے غیر محفوظ ممالک کی فہرست میں پاکستان ساتویں نمبر پر ہے جبکہ انڈونیشیا آٹھویں، فلپائن نویں اور الجزائر دسویں نمبر پر ہیں۔



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔