سیف سٹی کراچی منصوبے کیلئے 3 ارب سے زائد کی خطیر رقم جاری

ویب ڈیسک  اتوار 26 مئ 2024
صوبائی وزیرداخلہ نے کہا کہ یہ منصوبہ بتدریج سندھ کے دیگر شہروں تک لے کر جائیں گے—فوٹو: فائل

صوبائی وزیرداخلہ نے کہا کہ یہ منصوبہ بتدریج سندھ کے دیگر شہروں تک لے کر جائیں گے—فوٹو: فائل

  کراچی: حکومت سندھ نے محکمہ داخلہ کی جانب سے کراچی کو محفوظ شہر بنانے کے منصوبے کو عملی شکل دینے کے لیے سیف سٹی منصوبے کے لیے 3 ارب سے زائد کی خطیر رقم جاری کردی۔

صوبائی وزیر داخلہ سندھ ضیاالحسن لنجار نے  کراچی کو محفوظ ترین شہر بنانے کے حوالے سے سیف سٹی منصوبے کے آغاز سے متعلق پہلے مرحلے کو 12 ماہ میں پایہ تکمیل تک پہنچانے کی ہدایات جاری کردی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ سیف سٹی منصوبے کے مکمل ہونے سے نہصرف جرائم کی شرح میں بتدریج کمی آئے گی بلکہ جرائم کےخاتمے میں بھرپور مدد ملنے کے ساتھ ساتھ ملوث عناصر کی بیخ کنی بھی ممکن ہوسکے گی۔

سیف سٹی منصوبے کے دوسرے مرحلے کے بارے  میں انہوں نے کہا کہ سیکنڈ فیز میں کراچی کو مکمل طور پر کور کرنے کے تمام تر ضروری اقدامات سے متعلق کاوشیں کو یقینی بنائی جائیں گی۔

صوبائی وزیرداخلہ نے کہا کہ کراچی کے بعد اس پروجیکٹ کا دائرہ سندھ کے دیگر شہروں تک وسیع کرنے کے لیے مجموعی اقدامات کیے جائیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ کوئی حکومت نہیں چاہتی کہ کرائم کی وارداتیں ہوں، پیپلز پارٹی نے ہمیشہ برسراقتدار آتے ہی جرائم کے خلاف آہنی اقدامات کو اپنی تمام تر ترجیحات میں فوقیت دی ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت سندھ کی سپورٹ اور معاونت کی چھتری تلے سندھ پولیس نے جو اقدامات کیے ہیں ان کی بدولت امن وامان کی صورت حال میں بتدریج بہتری آرہی ہے، میں یہ نہیں کہتا کہ  صورت حال مکمل طور پر بہتر اور عوام کی امنگوں کے عین مطابق ہے تاہم پہلے کے مقابلے میں اس وقت صورت حال بہتر ضرور ہوئی ہے.

وزیر داخلہ سندھ نے مزید کہا کہ امن وامان کے استحکام اور اسے مفاد عامہ کے تقاضوں سے ہم آہنگ کرنے لیے ہر سطح پر بھرپور کاوشیں کی جارہی ہیں اور سب سے بڑھ کر جرائم کے خلاف میں اپنی پولیس کی کارکردگی سے مطمئن اور خوش ہوں۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔