بلوچستان میں بارشوں سے تباہی، 6 افراد جاں بحق، درجنوں مویشی بھی بہہ گئے

ویب ڈیسک  اتوار 9 اگست 2020
متاثرہ علاقوں میں درجنوں مویشی بھی سیلابی پانی میں بہہ گئے، کئی مقام پر شاہراہیں بند ۔ فوٹو :  فائل

متاثرہ علاقوں میں درجنوں مویشی بھی سیلابی پانی میں بہہ گئے، کئی مقام پر شاہراہیں بند ۔ فوٹو : فائل

 کوئٹہ: بلوچستان میں مون سون کی بارشوں کے بعد ندی نالوں میں طغیانی آگئی، 6 افراد اور درجنوں مویشی سیلابی ریلوں میں بہہ کر جاں بحق ہوگئے۔

بلوچستان میں مون سون بارشوں سے تباہ کاری کاسلسلہ جاری ہے. بولان میں بی بی نانی پل کا ایک حصہ منہدم ہوگیا، کوئٹہ سبی شاہراہ بند ہونے سے سندھ اور پنجاب سے رابطہ منقطع ہو گیا ہے، ندی میں زیادہ پانی ہونے کے باعث پل کی مرمت کا کام شروع نہیں ہوسکا تاہم علاقے میں پھنسے لوگوں کو ریسکیو کرنے کا کام جاری ہے۔

پی ڈی ایم اے کے مطابق ڈیرہ بگٹی میں 2، دالبندین میں ایک بچی، کوہلو، سوئی اور اوستہ محمد میں ایک ایک شخص سیلابی ریلے میں ڈوب کر جاں بحق ہوگئے۔ بولان، ڈھاڈر، جھل مگسی اور نصیرآباد سمیت کئی علاقوں میں سیلابی ریلے میں درجنوں مویشی بہہ گئے۔

دوسری طرف بولان میں شدید طغیانی کے باعث گیس سپلائی لائن بھی بری طرح متاثر ہوئی ہے جس سے صوبے بھر کے صارفین کو پریشانی کا سامنا ہے جب کہ ایس ایس جی سی حکام کے مطابق  صورتحال معمول پر آتے ہی مرمت شروع کر دی جائے گی۔

ادھر کوسٹل ہائی وے کو ہر قسم کی ٹریفک کیلئے کھول دیا گیا ہے، متاثرہ علاقوں کی انتظامیہ کو مکمل الرٹ رہنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔