لاہور ہائیکورٹ کا غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ ختم کرنے کا حکم

محمد ہارون  بدھ 20 جون 2018
بجلی کی طلب و رسد میں فرق پر لوڈشیڈنگ کی جارہی ہے، وکیل لیسکو فوٹوفائل

بجلی کی طلب و رسد میں فرق پر لوڈشیڈنگ کی جارہی ہے، وکیل لیسکو فوٹوفائل

لاہور: ہائیکورٹ نے غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ ختم کرکے تقسیم کار کمپنیوں کو بجلی کی بندش کی تفصیلات ویب سائٹ پر اپ لوڈ کرنے کا حکم دے دیا۔

لاہور ہائیکورٹ کے جج جسٹس شاہد کریم نے ایڈووکیٹ اظہر صدیق کی درخواست پر بجلی کی طویل اور غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کے خلاف درخواست کی سماعت کی۔ درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ بجلی کی اعلانیہ و غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کا سلسلہ جاری ہے جس کی وجہ سے صارفین کو سخت پریشانی کاسامنا ہے۔ درخواست گزار نے استدعا کی کہ عدالت غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ ختم کرنے کا حکم دے۔

بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں لیسکو، فیسکو اور گیپکو نے عدالت میں اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا شیڈول پیش کردیا۔ وکیل لیسکو نے عدالت کے روبرو کہا کہ بجلی کی طلب اور رسد میں فرق پر لوڈشیڈنگ کی جارہی ہے ۔ ہائیکورٹ نے ڈسٹری بیوشن کمپنیوں کو بجلی کی بندش کی تفصیلات ویب سائٹ پر اپ لوڈ کرنے کا حکم دیتے ہوئے غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ فوری ختم کرنے کا حکم دے دیا۔



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔