پاکستان ایل این جی کو آذربائیجان کی کمپنی سے معاہدے کی اجازت

ارشاد انصاری  جمعرات 15 جون 2023
کابینہ ڈویژن کیلیے 40کروڑ،47لاکھ روپے کی تکنیکی ضمنی گرانٹ کی منظوری دیدی
—فائل فوٹو

کابینہ ڈویژن کیلیے 40کروڑ،47لاکھ روپے کی تکنیکی ضمنی گرانٹ کی منظوری دیدی —فائل فوٹو

 اسلام آباد: کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی (ای سی سی) نے پاکستان ایل این جی لمیٹڈ کو آذربائیجان کی اسٹیٹ آئل کمپنی کے ساتھ فریم ورک معاہدے کی اجازت دیدی ہے۔

ای سی سی نے نجکاری کمیشن کو ہیوی الیکٹریکل کمپلیکس کی نجکاری کا عمل 30جون تک مکمل کرنے کی ہدایت کی ہے۔

ای سی سی کا اجلاس گزشتہ روز وزیر خزانہ سینیٹر اسحاق ڈار کی زیر صدارت ہوا، وفاقی وزرا نوید قمر، خرم دستگیر، مرتضیٰ محمود، شاہد خاقان عباسی، ڈاکٹر عائشہ غوث پاشا، مصدق ملک اور دیگر نے شرکت کی۔

وزارت توانائی کی سمری پر پاکستان ایل این جی اور آذربائیجان کی اسٹیٹ آئل کمپنی کے درمیان معاہدے کا جائزہ لیا گیا، ای سی سی نے معاہدے کی اجازت دیدی۔

ای سی سی نے وزارت پیٹرولیم کو تین ماہ ایڈوانس میں ایل این جی کی ضروریات کا جائزہ لینے کی ہدایت بھی کی۔ اجلاس میں چھ ایوی ایشن اسکواڈرن کی مختلف ضروریات کی مد میں کابینہ ڈویژن کے لیے 40کروڑ، 47لاکھ روپے کی تکنیکی ضمنی گرانٹ کی منظوری بھی دی گئی۔

 

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔