سینٹرل کنٹریکٹ پر تاحال دستخط نہ ہونے کا انکشاف

سلیم خالق  اتوار 29 اکتوبر 2023
بابرو دیگر نے اپنے لیے مراعات حاصل کر لیں ہمیں فراموش کر دیا، پلیئرز کا گلہ (فوٹو: کرک انفو)

بابرو دیگر نے اپنے لیے مراعات حاصل کر لیں ہمیں فراموش کر دیا، پلیئرز کا گلہ (فوٹو: کرک انفو)

کراچی: سینٹرل کنٹریکٹ پر تاحال دستخط نہ ہونے کا انکشاف سامنے آیا ہے، اسی وجہ سے واجبات کی ادائیگی نہیں ہوسکی جب کہ کیٹیگریز پربدستوربعض کرکٹرز ناخوش ہیں۔

پی سی بی نے نئے سینٹرل کنٹریکٹ میں کھلاڑیوں کے معاوضوں میں بڑا اضافہ کر دیا تھا،اے کیٹیگری میں موجود بابراعظم، محمد رضوان اور شاہین شاہ آفریدی کو ماہانہ 60 لاکھ 30 ہزار روپے دیے جائیں گے، بی کیٹیگری کو ماہانہ 41 لاکھ 47 ہزار 500 روپے ملنے ہیں، سی کیٹیگری کو ماہانہ 17 لاکھ65 ہزار روپے دیے جائیں گے، ڈی کیٹیگری کوماہانہ 11 لاکھ 32 ہزار500 روپے ملنے ہیں۔

معاہدوں میں تاخیر کی وجہ سے کھلاڑیوں کو کئی ماہ سے معاوضے نہیں ملے تھے، ورلڈکپ کیلیے روانگی سے قبل جب کنٹریکٹ پر اتفاق ہو گیا تو امید ہو گئی کہ واجبات ادا کر دیے جائیں گے، البتہ حیران کن طور پر اب بھی کسی کو کوئی رقم نہیں ملی۔

یہ بھی پڑھیں: سینٹرل کنٹریکٹ؛ 5 کھلاڑیوں کا اضافہ، سرفراز کی کیٹگری تبدیل

اس حوالے سے رابطے پر ایک کھلاڑی نے تصدیق کی کہ تاحال بورڈ نے کوئی ادائیگی نہیں کی، البتہ انھوں نے یہ بھی انکشاف کیا کہ کنٹریکٹ پر تو دستخط ہی نہیں ہوئے، ورلڈکپ اسکواڈ میں شامل بعض کرکٹرز نے ڈی کیٹیگری میں شمولیت پر اعتراض کیا ہے، چند دیگر بھی اپنی کیٹیگریز سے خوش نہیں ہیں۔

ذرائع نے بتایا کہ کنٹریکٹ کے معاملے میں خود تمام کھلاڑی بھی ایک پیج پر نہیں رہے، بعض کو لگتا ہے کہ بابر اعظم و دیگر نے اپنے لیے مراعات حاصل کر لیں دیگر کا نہیں سوچا۔

یہ بھی پڑھیں: سینٹرل کنٹریکٹ سے مطمئن اور خوش ہوں، بابراعظم

اس حوالے سے رابطے پر پی سی بی کے ایک آفیشل نے کہا کہ جب تک معاہدوں پر سائن نہ ہوں ادائیگی کیسے ممکن ہوگی؟ ہم نے کھلاڑیوں سے یہ تک کہا تھا کہ ای میل کے ذریعے اپنی رضامندی ظاہر کر دیں مگر سب خاموش رہے، اب ایک آفیشل کو معاہدوں کے ساتھ بھارت بھیجا ہے تاکہ وہ دستخط کرا کے لائے تو ادائیگیاں کی جائیں۔

یاد رہے کہ بورڈ نے چند روز قبل سرفراز احمد کی کیٹیگری تبدیل کرتے ہوئے بعض نئے کھلاڑیوں کو بھی کنٹریکٹ کی فہرست کا حصہ بنایا تھا۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔