پی ایس ایل کے ترانے پر تنازع سامنے آ گیا

سلیم خالق  منگل 16 جنوری 2024
ماضی کے ایک کیس کو بنیاد بناکرفرنچائز کی شکایت پر پروجیکٹ سے الگ۔ فوٹو: ایکسپریس ویب

ماضی کے ایک کیس کو بنیاد بناکرفرنچائز کی شکایت پر پروجیکٹ سے الگ۔ فوٹو: ایکسپریس ویب

کراچی: ایچ بی ایل پی ایس ایل کے ترانے پر تنازع سامنے آ گیا جب کہ علی ظفر پی سی بی کی جانب سے کمٹمنٹ سے پیچھے ہٹنے پر ناخوش ہیں۔

ایچ بی ایل پی ایس ایل میں ابتدائی تینوں سیزنز کے ترانے علی ظفر نے گائے تھے،2017 میں ’’سیٹی بجے گی‘‘ والا اینتھم اب بھی سب سے زیادہ پسند کیا جاتا ہے۔

2018 میں علی ظفر پر ساتھی گلوکارہ میشا شفیع نے ہراسگی کا الزام لگایا جس سے ان کا کیریئر شدید متاثر ہوا، تب سے انھیں دوبارہ پی ایس ایل کا ترانا گانے کا موقع بھی نہیں مل پایا، ان پر الزام ثابت نہیں ہو سکا لیکن ایک داغ لگ گیا جو لاکھ کوشش کے باوجود اب تک صاف نہیں ہو سکا۔

یہ بھی پڑھیں: “پی ایس ایل 9″ کا ترانہ، علی ظفر کیجانب سے ووٹنگ شروع

ذرائع نے بتایا کہ پی سی بی نے رواں برس پی ایس ایل 9 کیلیے علی ظفر کی آواز میں اینتھم ریکارڈ کرانے کا پلان بنایا، لیگ کے ایک اعلیٰ آفیشل نے ان سے کمٹمنٹ کر لی جس پر گلوگار نے کام بھی شروع کر دیا،انھوں نے 3 گانے بنائے جس میں سے ایک منتخب بھی ہو گیا،البتہ بات جب پی ایس ایل فرنچائزز تک پہنچی تو ایک خاتون آفیشل نے اعتراض اٹھا دیا۔

ان کا کہنا تھا کہ ماضی کے واقعے کی وجہ سے علی ظفر کو لیگ سے منسلک کرنا درست نہیں اس سے ساکھ متاثر ہو گی، اس بات کو جواز بنا کر بورڈ نے علی ظفر کو پروجیکٹ سونپنے کا ارادہ تبدیل کر دیا، گلوکار اس صورتحال سے ناخوش ہیں، انھوں نے پہلے سوشل میڈیا پر پول کرایا اور اب 2 طویل پوسٹس کر کے اپنی فرسٹریشن کا اظہار کیا ہے۔

ابھی یہ فیصلہ نہیں ہوا کہ علی ظفر کی جگہ کون سے گلوکار پی ایس ایل 9 کا اینتھم گائیں گے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔