ٹی20 ورلڈکپ؛ پاک بھارت میچ ’ڈراپ ان‘ پچ پر ہوگا

اسپورٹس ڈیسک  بدھ 17 جنوری 2024
نیویارک میں ہائی وولٹیج مقابلے کے میدان کی تیاری تیزی سے جاری (فوٹو: ٹوئٹر)

نیویارک میں ہائی وولٹیج مقابلے کے میدان کی تیاری تیزی سے جاری (فوٹو: ٹوئٹر)

  کراچی: ٹی 20 ورلڈکپ میں پاک بھارت میچ ’ڈراپ ان‘ پچ پر کھیلا جائے گا جب کہ نیویارک میں ہائی وولٹیج مقابلے کے میدان کی تیاری تیزی سے جاری ہے۔

رواں برس ٹی 20 ورلڈکپ جون اور جولائی میں ویسٹ انڈیز اور امریکا میں مشترکہ طور پر منعقد ہوگا، کیریبیئن جزائر میں پہلے بھی کرکٹ کے میگا ایونٹ ہوتے رہے ہیں، البتہ امریکا میں پہلی بار اتنا بڑا ایونٹ منعقد ہونے والا ہے، وہاں پر انٹرنیشنل کرکٹ سہولیات کی بروقت دستیابی کے حوالے سے کچھ خدشات بھی پائے جاتے ہیں البتہ ویسٹ انڈین کرکٹ بورڈ اور ورلڈکپ کے چیف ایگزیکٹیو جونی گریو امریکا میں بھی میچز کے کامیاب انعقاد کیلیے پُراعتماد ہیں۔

ایک انٹرویو میں انھوں نے کہا کہ میامی اور ڈیلس میں کرکٹ میچز ہوتے رہے ہیں، نیویارک میزبان وینیوز میں شامل ہے وہاں پر پاکستان اور بھارت کے درمیان ہائی وولٹیج میچ بھی ہوگا۔

یہ بھی پڑھیں: ٹی20 ورلڈکپ؛ پاک بھارت ٹاکرے کی پوسٹ! بھارتی فینز آگ بگولہ

انٹرنیشنل میچز کے میزبانی کیلیے نیویارک میں عارضی انتظامات کیے جارہے ہیں، اس بارے میں گریو نے کہا کہ میں وہاں پر مقابلوں کے حوالے سے کافی پُراعتماد ہوں، پچ ڈراپ ان ہوگی، آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ میں میچز ایسی ہی پچز پر میچ کھیلے جاتے ہیں، ہمیں بہترین کیوریٹر کی خدمات میسر ہیں۔

انھوں نے کہا کہ امریکا اسپورٹس کی ایک بہت بڑی مارکیٹ ہے، میامی کو صرف ہفتے کے اختتام پر فارمولاون وینیو میں تبدیل کردیا گیا تھا، ہمیں بھی اگر بروقت انتظامات مکمل ہونے کا یقین نہیں ہوتا تو ہم کبھی وہاں میچز کے انعقاد کا نہ سوچتے، میں سمجھتا ہوں کہ جب نیویارک کا عارضی وینیو تیار ہوجائے گا تو آپ بھی اسے دیکھ کر حیران رہ جائیں گے۔

یہ بھی پڑھیں: ٹی20 ورلڈکپ 2024؛ پاک بھارت مقابلے کی ممکنہ تاریخ سامنے آگئی

ایک سوال پر جونی گریو نے کہا کہ ہم اپنے ٹائم زون میں کرکٹ کو فروغ دینے کی کوشش کررہے ہیں، امریکا میں ایونٹ کے انعقاد کا مقصد بھی یہی ہے، وہاں پر بڑے اسپانسرز اور براڈکاسٹرز موجود ہیں، ان سے کرکٹ کو فائدہ حاصل ہوسکتا ہے۔

انھوں نے کہا کہ ہم نے 2007 میں اپنے گراؤنڈز پر ون ڈے ورلڈکپ سے بہت کچھ سیکھا، بعد میں کئی ملٹی ٹیم ایونٹس کی عمدہ میزبانی کی، اس بار بھی ہمیں 2 الگ ممالک میں انعقاد کے باوجود ایونٹ کے انتہائی کامیاب ہونے کی پوری امید ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔