خفیہ اہلکاروں کو کاٹنے پر جوبائیڈن کے کتے کو وائٹ ہاؤس سے نکال دیا گیا

ویب ڈیسک  جمعرات 22 فروری 2024
صدر جوبائیڈن کے کتے ’کمانڈر‘ نے حفاظتی اہلکاروں کو 24 بار کاٹا تھا، فوٹو: فائل

صدر جوبائیڈن کے کتے ’کمانڈر‘ نے حفاظتی اہلکاروں کو 24 بار کاٹا تھا، فوٹو: فائل

 واشنگٹن: امریکی صدر جوبائیڈن کا کمانڈر نامی کتا اُن کے محافظوں اور اہلکاروں کے لیے خطرے کی گھنٹی بن گیا تھا جس کے باعث کمانڈر کو وائٹ ہاؤس سے نکالنا پڑا۔

سی این این کی ایک رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ وائٹ ہاؤس میں جوبائیڈن کے چہیتے کتے ’’کمانڈر‘‘ نے اکتوبر 2022 سے جولائی 2023 کے درمیان کم از کم 24 بار امریکی صدر کی حفاظت پر مامور خفیہ سروس کے اہلکاروں کو بری طرح کاٹا تھا۔

کتے کے کاٹنے کی وجہ سے ان اہلکاروں کی کلائی، بازو، کہنی، کمر، سینے، ران اور کندھے پر گہرے زخم آئے تھے اور ایک اہلکار کو ٹانکوں کی ضرورت پر پڑی تھی جب کہ ایک اہلکار کے خون سے وائٹ ہاؤس کا فرش لال ہوگیا تھا۔

اُس وقت وائٹ ہاؤس کے فرش کو دھونے میں 20 منٹ لگے اور ایسٹ ونگ کے دوروں کو آدھے گھنٹے کے لیے معطل کرنا پڑا تھا۔ ان پے در پے واقعات پر جوبائیڈن کے حفاظتی اہلکاروں میں میڈیکل کٹ بھی تقسیم کی گئی تھی۔

اس میڈیکل کٹ میں حفاظتی مقاصد کے لیے درد کش ادویات، اینٹی بائیوٹک مرہم، کالی مرچ کا اسپرے، ایک مغز اور کتے کے بسکٹ سمیت ایک “چھوٹا نگہداشت پیکیج” شامل تھا۔

تاہم کمانڈر کے اہلکاروں پر حملے نہ رکنے کی وجہ سے بالآخر صدر جوبائیڈن کے چہیتے کتے کو گزشتہ سال کے آخر میں وائٹ ہاؤس سے منتقل کردیا گیا تاہم اُس وقت وجہ نہیں بتائی گئی تھی۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔