سابق کمشنر راولپنڈی کیخلاف ریاست کے خلاف سازش کی سخت کارروائی کا فیصلہ

محمد الیاس  جمعرات 22 فروری 2024
فوٹو فائل

فوٹو فائل

 لاہور: پنجاب حکومت نے سابق کمشنر راولپنڈی لیاقت چٹھہ کے خلاف ریاسٹ کے خلاف سازش کی کارروائی کا فیصلہ کیا ہے جس کی سزا ایک سے 10 سال قید ہے۔

تفصیلات کے مطابق ایڈیشنل آئی جی لیگل نے سابق کمشنر راولپنڈی لیاقت چٹھہ کے خلاف انتہائی سخت کارروائی کے لئے محکمہ داخلہ کو خط لکھا جس میں لیاقت چٹھہ کے خلاف غیر معمولی دفعات کے تحت کارروائی کرنے کی سفارش کی گئی ہے۔

ذرائع کے مطابق ڈی آئی جی لیگل کے خط کی روشنی میں ریاست نے سابق کمشنر راولپنڈی لیاقت چھٹہ کے خلاف فریق بنے کا فیصلہ کیا ہے اور اُن کے خلاف کارروائی کے لئے ثبوت اور دستاویزات جمع کی جارہی ہیں، اسی کے ساتھ مقدمات کی پیروی بھی ریاست کرے گی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ڈی آئی جی لیگل کے خط میں لیاقت چٹھہ کے خلاف ریاست کے خلاف سازش کرنے کی کارروائی کا فیصلہ کیا گیا ہے، حکومت پنجاب سی آر پی سی کی دفعات 196 اور 196اے کے تحت کاروائی کرے گی۔

مزید پڑھیں: ایک سیاسی جماعت کے کہنے پر دھاندلی کے الزامات لگائے، قوم سے معافی مانگتا ہوں، سابق کمشنر راولپنڈی

ذرائع کے مطابق لیاقت چٹھہ کے خلاف نفرت پیدا کرنے اور معاشرے کو تقسیم پر پاکستان پینل کوڈ کی دفعہ 153 کے تحت امن خراب کرنے اور گروہوں میں تقسیم کرنے کی کارروائی کی سفارش کی گئی ہے۔

ذرائع کے مطابق ایڈیشنل آئی جی لیگل نے اپنے خط میں لیاقت چٹھہ کے خلاف اپنے عہدے کے ناجائز استعمال کے خلاف پاکستان پینل کوڈ 505، الیکشن ایکٹ 178 کے تحت ووٹنگ کے عمل میں مداخلت، 187 دفعہ کے تحت سرکاری ملازم کیخلاف کارروائی کی بھی سفارش کی ہے۔

پنجاب حکومت کے ذرائع کے مطابق لیاقت چٹھہ کے خلاف تمام مذکورہ دفعات کے تحت کارروائی کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس میں پولیس، قانون نافذ کرنے والے اداروں، پراسیکیویشن سے مدد لی جائے گی مذکورہ بالا جرائم کی سزا ایک سے دس سال قید ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔