ایشیاکپ؛ شاہد آفریدی نے ’جے شاہ‘ کو کرارا جواب دے ڈالا

ویب ڈیسک  جمعرات 7 ستمبر 2023
2017 سے 2023 میں کتنی غیر ملکی ٹیموں نے پاکستان دورہ کیا، شیڈول بتادیا (فوٹو: ایکسپریس ویب)

2017 سے 2023 میں کتنی غیر ملکی ٹیموں نے پاکستان دورہ کیا، شیڈول بتادیا (فوٹو: ایکسپریس ویب)

ایشین کرکٹ کونسل (اے سی سی) کے صدر اور بھارتی کرکٹ بورڈ (بی سی سی آئی) کے سربراہ جے شاہ کو سابق چیف سلیکٹر اور کپتان شاہد آفریدی نے کرارا جواب دیدیا۔

سماجی رابطے کی سائٹ ٹوئٹر (ایکس) پر ٹوئٹ کرتے ہوئے ایشین کرکٹ کونسل کے صدر جے شاہ کو پاکستان میں سیکیورٹی کے حوالے سے دیئے گئے بیان کے جواب دیتے ہوئے لکھا کہ ‘جے شاہ کا پاکستان میں سکیورٹی کی صورتحال سے متعلق بیان دیکھا تو ان کی یادداشت تازہ کرنے کے لیے بتا دوں کہ پاکستان نے گزشتہ 6 سال میں کئی غیر ملکی ٹیموں اور کھلاڑیوں کی میزبانی کی ہے’۔

شاہد آفریدی پوسٹ میں بتایا ہے کہ 2017 سے 2023 کے دوران کون کون سی بین الاقوامی ٹیمیں پاکستان کا دورہ کرچکی ہیں۔

ٹوئٹ کے اختتام پر شاہد آفریدی نے جے شاہ کو مخاطب کرتے ہوئے لکھا کہ ‘مسٹر شاہ کوئی شک نہیں کہ پاکستان 2025 کی چیمپئنز ٹرافی میں بھارت کی میزبانی کیلئے بھی تیار ہے’۔

قبل ازیں گزشتہ روز جے شاہ نے ایشیاکپ کے میچز پاکستان میں نہ کروانے پر بیان جاری کیا تھا جس میں انہوں نے کہا تھا کہ براڈ کاسٹرز، میڈیا رائنٹس ہولڈرز پاکستان میں ایشیاکپ کے تمام میچز کروانے سے ہچکچارہے تھے جبکہ سیکیورٹی مسائل اور معاشی حالات بھی انکی بڑی وجہ تھی۔

مزید پڑھیں: ایشیاکپ؛ تمام میچز پاکستان میں کیوں نہیں کروائے گئے، جے شاہ کا بیان سامنے آگیا

انہوں نے اپنی ای میل کے ذریعے کہا تھا کہ بطور اے سی سی صدر کی حیثیت سے میں ٹورنامنٹ کروانے کیلئے پرعزم تھا، اس لیے سری لنکا کو مشترکہ میزبان بنایا اور ہائبرڈ ماڈل کے تحت پاکستان میں بھی کروائے گئے۔

مزید پڑھیں: ایشیاکپ کے معاملے پر ایشین کرکٹ کونسل اور پی سی بی میں سرد جنگ شروع

دوسری جانب ایشیاکپ کے میچز کیلئے میزبان پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کو بتائے بغیر پہلے کولمبو سے ہمبنٹوٹا اور بعدازاں دوبارہ کولمبو میں ہی کروانے کا فیصلہ کیا گیا جس پر پاکستان نے تشویش کا اظہار کیا اور احتجاج ریکارڈ کروایا۔

مزید پڑھیں: ’ہمیں بادشاہوں کی طرح رکھا گیا‘ راجر بنی بھی پاکستانی مہمان نوازی پر بول اُٹھے

واضح رہے کہ ایشین کرکٹ کونسل کے سربراہ جے شاہ ایشیاکپ کے متنازعہ شیڈول کے سبب تنقید کی زد میں ہیں کیونکہ کولمبو اور کینڈی میں بارشوں کے باعث پاک بھارت میچز متاثر ہونے کا خدشہ ہے۔

ایشیاکپ میں پاک بھارت ٹیمیں 10 سمتبر کو ایک مرتبہ پھر سپر فور مرحلے میں ایک دوسرے کے مدمقابل آئیں گی۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔