میں 43 برس اور دو بچوں کی ماں ہونے کے باوجود بھی پُرکشش ہوں؛ کرینہ کپور

ویب ڈیسک  بدھ 15 نومبر 2023
کرینہ کپور اور سیف علی خان 16 اکتوبر 2012 کو رشتہ ازدواج میں منسلک ہوئے تھے : فوٹو ویب ڈیسک

کرینہ کپور اور سیف علی خان 16 اکتوبر 2012 کو رشتہ ازدواج میں منسلک ہوئے تھے : فوٹو ویب ڈیسک

بالی ووڈ میں ’بیبو‘ کے نام سے مشہور معروف اداکارہ کرینہ کپور نے کہا ہے کہ وہ 43 برس کی ہوگئی ہیں اور دو بچوں کی ماں ہیں لیکن اس کے باوجود بھی وہ پُرکشش ہیں۔

حال ہی میں کرینہ کپور نے فیشن میگزین “ڈزنی” کو انٹرویو دیا جس میں اُنہوں نے اپنی شادی شدہ زندگی اور شوبز کیریئر سے متعلق گفتگو کی اور ساتھ ہی میگزین کے سرورق کے لیے فوٹوشوٹ بھی کروایا۔

کرینہ کپور نے دورانِ انٹرویو اپنے کیریئر کے حوالے سے کہا کہ “مجھے اپنے کیریئر کے آغاز میں تبو، گلین اینڈرسن اور کیٹ ونسلیٹ بہت پسند تھیں، ان تین اداکاراوْں کی وجہ سے ہی اداکاری شروع کی اور اپنی پہنچان بنائی”۔

اداکارہ نے کہا کہ “میں نے ہمیشہ اپنے کیریئر میں منفرد کام کیا، میرے ہر پراجیکٹ سے مجھے منفرد پہچان ملی اور مداحوں کی جانب سے میرے کام کو خوب سراہا گیا”۔

اُنہوں نے اپنی پُرکشش شخصیت کے حوالے سے کہا کہ “میں 43 کی برس کی ہوگئی ہوں، دو بچوں کی ماں بھی ہوں اور خاندانی زندگی میں بھی مصروف رہتی ہوں لیکن میں اس کے باوجود بھی پہلی کی طرح خوبرو اور پُرکشش ہوں”۔

مزید پڑھیں: سیف علی خان نے مردوں کو جوان اور خوبصورت خواتین سے شادی کا مشورہ دے دیا

شادی اور خاندان کے بارے میں بات کرتے ہوئے کرینہ کپور نے کہا کہ “جب بچوں کی خواہش ہو تو اُس وقت شادی کرلینی چاہیے”۔

کرینہ کپور نے اپنی مثال دیتے ہوئے کہا کہ “میں اور سیف علی خان شادی سے قبل پانچ سال تک تعلقات میں تھے لیکن جب مجھے بچوں کی خواہش ہوئی تو ہم دونوں نے شادی کرلی”۔

اداکارہ نے مزید کہا کہ “میری ازدواجی زندگی بہت پُرسکون ہے، میری دنیا شوہر، دو بچوں، اہلخانہ اور چند قریبی دوستوں تک محدود ہے اور بہترین زندگی گرز رہی ہے”َ۔

یاد رہے کہ کرینہ کپور اور سیف علی خان 16 اکتوبر 2012 کو رشتہ ازدواج میں منسلک ہوئے تھے یہ سیف کی دوسری شادی تھی جس سے ان کے دو بیٹےتیمور علی خان اور جہانگیر علی خان  ہیں۔

اس سے قبل سیف اپنے سے بڑی عمر کی  ساتھی اداکارہ امریتا سنگھ سے 1991 میں شادی کی تھی جن سے ان کے دو بچے بیٹی سارہ علی خان اور ابراہیم علی خان ہیں۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔