امریکا نے غزہ میں جنگ بندی کیلئے سلامتی کونسل کی قرارداد ویٹو کردی

ویب ڈیسک  ہفتہ 9 دسمبر 2023
حماس کے حملے معصوم فلسطینیوں کی سزا کا جواز نہیں، سیکرٹری جنرل اقوام متحدہ انتونیو گوتریس۔ فوٹو: اے پی

حماس کے حملے معصوم فلسطینیوں کی سزا کا جواز نہیں، سیکرٹری جنرل اقوام متحدہ انتونیو گوتریس۔ فوٹو: اے پی

اقوام متحدہ: امریکا نے غزہ میں جنگ بندی کیلئے سلامتی کونسل کی قرارداد ویٹو کردی۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکا نےغزہ میں جنگ بندی کیلئے سلامتی کونسل میں پیش کی گئی قرارداد ویٹو کو کردیا جس کی حمایت سلامتی کونسل کے تقریباً تمام ممبران اور دیگر ممالک نے کی تھی جس میں غزہ میں فوری طور پر انسانی بنیادوں پر جنگ بندی کا مطالبہ کیا گیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: اقوام متحدہ میں فلسطینیوں کے حق میں 5 قراردادیں منظور؛ امریکا غیر حاضر

اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں قرارداد متحدہ عرب امارات کی جانب سے پیش کی گئی۔ سلامتی کونسل کے 15 میں سے 13 اراکین نے اس کی حمایت کی، برطانیہ غیر حاضر رہا جبکہ امریکا نے مخالفت کی۔ فرانس اور جاپان جنگ بندی کے مطالبے کی حمایت کرنے والوں میں شامل تھے۔

قرارداد کے حامی ممالک نے اسے ایک خوفناک دن قرار دیا اور جنگ کے تیسرے مہینے میں مزید شہریوں کی ہلاکتوں اور تباہی سے خبردار کردیا۔

یہ بھی پڑھیں: غزہ میں حماس کی جگہ لینے کیلیے فلسطین اتھارٹی کو منا رہے ہیں، برطانیہ

دوسری جانب اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتریس نے غزہ میں جنگ بندی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ حماس کے حملے معصوم فلسطینیوں کی سزا کا جواز نہیں۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔