شاہین کی حمایت میں عثمان خواجہ سامنے آگئے

ویب ڈیسک  جمعرات 4 جنوری 2024
مجھے نہیں لگتا کہ پاکستان طویل فارمیٹ کی کرکٹ کی قدر نہیں کرتا، آسٹریلوی اوپنر (فوٹو: ایکسپریس ویب)

مجھے نہیں لگتا کہ پاکستان طویل فارمیٹ کی کرکٹ کی قدر نہیں کرتا، آسٹریلوی اوپنر (فوٹو: ایکسپریس ویب)

آسٹریلوی اوپنر عثمان خواجہ سڈنی ٹیسٹ میں شاہین آفریدی کی عدم شمولیت پر فاسٹ بولر کی حمایت میں سامنے آگئے۔

سڈنی ٹیسٹ میچ کے دوسرے روز کھیل کے اختتام پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے آسٹریلوی اوپنر عثمان خواجہ نے ٹیسٹ میچ میں شاہین آفریدی کے آرام سے متعلق سوال پر کہا کہ ’’مجھے نہیں لگتا کہ پاکستان طویل فارمیٹ کی کرکٹ کی قدر نہیں کرتا‘‘ البتہ فاسٹ بولر کے ورک لوڈ سے متعلق علم نہیں۔ سیریز کے دوران ہمارے بالرز بھی ریسٹ کرتے ہیں۔

انہوں ںے تسلیم کیا کہ ورک لوڈ مینجمنٹ ضروری ہے، جس کی وجہ سے فٹنس پر اثر پڑتا ہے۔ شاہین کی پچھلی انجری کو دیکھتے ہوئے لگتا ہے کہ انہیں آرام کی ضرورت ہے۔

مزید پڑھیں: سڈنی ٹیسٹ میں شاہین کیوں نہیں کھیلا! وسیم اکرم ٹیم مینجمنٹ پر برس پڑے

عثمان خواجہ نے کہا کہ انجری کے بعد واپسی پر ٹیسٹ کرکٹ کھیلنا آسان نہیں ہے تاہم شاہین کے حوالے سے بات کرنے سے پہلے مجھے حقائق جاننا ضروری ہیں، ایسا لگتا ہے مینجمنٹ انہیں انجری سے بچانے کی کوشش کررہی ہے۔

مزید پڑھیں: سڈنی ٹیسٹ؛ شاہین کے نہ کھیلنے کے فیصلے کو وقار یونس نے مضحکہ خیز قرار دیدیا

قبل ازیں گزشتہ روز سابق کپتان وسیم اکرم اور لیجنڈری فاسٹ بولر وقار یونس نے شاہین آفریدی کو سڈنی ٹیسٹ میں پلئینگ الیون کا حصہ نہ بنانے پر ناراضگی کا اظہار کیا تھا۔

واضح رہے کہ ٹی20 ورلڈکپ 2023 کے دوران شاہین آفریدی فائنل میں انجری کا شکار ہوگئے تھے جس کے بعد وہ اہم معرکے میں انگلینڈ کیخلاف بالنگ نہیں کرواسکے تھے جسکا نقصان پاکستان کو اٹھانا پڑا تھا۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔