شیر افضل مروت نے بیرسٹر گوہر کو منالیا، بھرپور ساتھ دینے کا اعلان

ویب ڈیسک  ہفتہ 24 فروری 2024
فوٹو اسکرین گریپ

فوٹو اسکرین گریپ

 اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف کی جانب سے شوکاز نوٹس جاری ہونے کے بعد شیر افضل مروت نے بیرسٹر گوہر کو اُن کے گھر جاکر منالیا۔

تفصیلات کے مطابق شیر افضل مروت پارٹی کی جانب سے نوٹس ملنے کے بعد ناراضی قائم مقام چیئرمین بیرسٹر گوہر کے گھر پر پہنچے اور اپنے بیان سے متعلق وضاحت کی۔

شیر افضل مروت نے پارٹی کے قائمقام چیئرمین کو گلے لگایا اور اُن کے گال پر بوسہ دیا جس کے بعد دونوں رہنماؤں میں ناراضی ختم ہوگئی۔

بعد ازاں بیرسٹر گوہر کے ساتھ بیٹھ کر شیر افضل مروت نے اپنے بیان میں کہا کہ میں نے میڈیا پر جو گفتگو کی اُس کو غلط رنگ دے کر پیش کیا گیا، میرا مؤقف شروع سے ایک ہی ہے کہ الیکشن کے حوالے سے ہمیں جیسا احتجاج کرنا چاہیے تھا ویسا ردعمل نہیں دیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ بیرسٹر گوہر کو اگر میری کوئی بات بری لگی تو وہ آدھی رات کو کال کر کے بولتے تو میں ان کے گھر پر آکر ناراضی ختم کرلیتا۔

شیر افضل مروت نے کہا کہ بیرسٹر گوہر میرے بھائی ہیں اور میں یہاں یہ معلوم کرنے آیا کہ یہ واقعی ناراض ہیں یا پھر شوکاز نوٹس خلائی مخلوق کی طرف سے بھیجا گیا، میں نے بیرسٹر گوہر کو گلے لگایا ماتھے پر بوسہ لیا تو ان کے ایک شکن بھی نہیں آئی۔

مزید پڑھیں: بیرسٹر گوہر کیخلاف بیان پر پی ٹی آئی کا شیر افضل مروت کو شوکاز نوٹس

انہوں نے کہا کہ ہم اس ملاقات اور ویڈیو پیغام کے توسط سے پی ٹی آئی کارکنان کو یہ یقین دلانا چاہتے ہیں کہ قیادت میں کوئی اختلافات نہیں ہیں، بیرسٹر گوہر ہمارے چیئرمین رہیں گے اور یہ عمران خان کی طرف سے نامزد کردہ چیئرمین ہیں، خان نے جس کو بھی نامزد کیا وہ ہمارے سر کا تاج ہے۔

اُن کا مزید کہنا تھا کہ ’بیرسٹر گوہر آئندہ بھی پارٹی کے چیئرمین رہیں گے اور ہم ان کے ساتھ ڈٹ کر کھڑے رہیں گے، جو لوگ اختلافات پیدا کر کے کارکنان کو مایوس کرنا چاہتے ہیں انہیں ہمیشہ کی طرح اس بار بھی ناکامی ہوگی‘۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔