سوشل میڈیا پر مکمل پابندی کیلیے سینیٹ میں قرارداد جمع، پیر کو بحث ہوگی

ویب ڈیسک  ہفتہ 2 مارچ 2024
فوٹو فائل

فوٹو فائل

 اسلام آباد: سوشل میڈیا پر مستقل پابندی کیلیے سینیٹ میں پاکستان پیپلزپارٹی کے سینیٹر نے قراردار جمع کرادی جس پر پیر کو بحث کی جائے گی۔

پاکستان پیپلزپارٹی کے سینیٹر بہرا مند تنگی نے سوشل میڈیا پر مکمل پابندی عائد کرنے کیلیے سینیٹ میں قرارداد پیش کی ہے جس کو پیر کے اجلاس کے ایجنڈے میں شامل کرلیا گیا ہے۔

قرارداد میں کہا گیا ہے کہ سوشل میڈیا پاک فوج کے خلاف منفی اور بدینتی پر مبنی پروپیگینڈا کے ذریعے ملکی مفادات کے خلاف استعمال ہونے پر تشویش ہے، سوشل میڈیا پلیٹ فارم کے ملک کی نوجوان نسل پر منفی اثرات مرتب ہو رہے ہیں۔

سینیٹر بہرا مند تنگی نے کہا کہ سوشل میڈیا پلیٹ فارمز ہمارے مذہب ، ثقافت  کے خلاف اصولوں کو فروغ دینے کیلئے استعمال ہو رہے ہیں اور یہاں پاک فوج کے خلاف منفی اور بدینتی پر مبنی پروپیگینڈا کے ذریعے ملکی مفادات کو نقصان پہنچایا جارہا ہے جس پر تشویش ہے۔

قرارداد کے متن میں لکھا گیا ہے کہ مفاد پرست عناصر یہ پلیٹ فارمز مختلف معاملات پر جھوٹی خبریں پھیلا نے استعمال کر رہے ہیں، سوشل میڈیا پلیٹ فارمز جعلی قیادت کو فروغ  دے کر نوجوان نسل کو دھوکا دینے کی کوشش کر رہے ہیں، سینیٹ  حکومت پاکستان کو تجویز کرتا ہے کہ فیس بک، ٹک ٹاک ، انسٹا گرام ، ایکس اور یوٹیوب پر پابندی لگائے۔

قرارداد میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر پابندی لگا کر نوجوان نسل کو ان کے منفی اور تباہ کن اثرات سے بچایا جائے۔

اُدھر فیس بک، ٹک ٹاک ، انسٹا گرام ، ایکس اور یوٹیوب پر پابندی لگانے کی قرارداد کو سینیٹ کے ایجنڈے میں شامل کرلیا گیا ہے۔ جس پر پیر کے روز اجلاس میں بحث کی جائے گی۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔