بھارت؛ جہیز میں فارچیونر گاڑی نہ دینے پر بہو کو بیدردی سے قتل کردیا گیا

ویب ڈیسک  منگل 2 اپريل 2024
پولیس نے سسر کو گرفتار کرلیا جب کہ شوہر، ساس، دیور اور نند کی تلاش میں چھاپا مار کارروائی جارہی ہے، فوٹو؛ بھارتی میڈیا

پولیس نے سسر کو گرفتار کرلیا جب کہ شوہر، ساس، دیور اور نند کی تلاش میں چھاپا مار کارروائی جارہی ہے، فوٹو؛ بھارتی میڈیا

نئی دہلی: بھارتی ریاست اترپردیش کے شہر گریٹر نوائیڈا میں جہیز نہ لانے پر مہنگی گاڑی ٹویوٹا فارچیونر نہ ملنے پر سسرالیوں نے بہو کو قتل کردیا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق نوائیڈا میں کرشمہ نامی لڑکی اپنے سسرالیوں کے مبینہ تشدد کے باعث ہلاک ہوگئی۔ جس کی شادی 2022 میں وکاس سے ہوئی تھی۔

پولیس نے شوہر وکاس، سسر سومپال بھاٹی، ساس راکیش، نند رینکی، دیور سنیل اور انیل کے خلاف مقدمہ درج کرلیا۔

سسر سومپال کو حراست میں لے لیا گیا جب کہ بقیہ کی تلاش میں چھاپے مار کارروائی جاری ہیں۔

کرشمہ کے بھائی دیپک نے پولیس میں شکایت درج کرائی کہ ان کی بہن کو سسرالیوں نے تشدد کرکے مارا ہے۔

درخواست میں کہا گیا ہے کہ کرشمہ اور وکاس کی شادی 2022 میں ہوئی تھی۔ بہن کو 11 لاکھ مالیت کا سونا اور ایس یو وی گاڑی بھی دی گئی تھی لیکن ان کا پیٹ پھر بھی نہیں بھرا تھا۔

کرشمہ کے بھائی دیپک نے اپنے بیان میں مزید کہا کہ کرشمہ کے سسرالی مزید جہیز مانگنے لگے اور جب بیٹی کی پیدائش ہوئی تو بہن کو تشدد کا نشانہ بنایا جاتا رہا۔

بھائی کے بقول معاملات کے حل کے لیے پنچایت بھی گئے اور سسرال والوں کو مزید 10 لاکھ دیئے گئے لیکن تشدد پھر بھی نہ رک سکا اور فارچیونر گاڑی مانگنے لگے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔