ورزش بڑھاپے میں ڈی این اے کو نقصان سے بچا سکتی ہے، تحقیق

ویب ڈیسک  جمعـء 12 اپريل 2024

یوٹاہ: ایک نئی تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ معمول کی ایروبک ورزش بڑھاپے میں ڈی این اے کو نقصان پہنچنے سے روک سکتی ہے۔

یونیورسٹی آف یوٹاہ کے ڈیپارٹمنٹ آف انٹرنل میڈیسن میں کی جانے والی تحقیق میں ورزش کے ڈی این اے پر پڑنے والے نقصان اور ٹیلومیئر ڈس فنکشن کا مطالعہ کیا گیا۔ ان دونوں اہم عوامل کا عمر بڑھنے اور عمر سے متعلقہ بیماریوں سے تعلق ہوتا ہے۔

ٹیلو میئرس (کروموسوم کے سروں پر موجود حفاظتی ڈھکن) جینیاتی استحکام کو برقرار رکھنے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔ تاہم، وقت کے ساتھ یہ قدرتی طور پر چھوٹے ہوجاتے ہیں جو خلیات کی عمر بڑھنے اور فعالیت کم ہونے کا سبب بنتے ہیں۔

یہ تحقیق بوڑھے افراد کے ایسے گروہ پر کی گئی جو باقاعدگی سے ورزش کیا کرتے تھے۔ تحقیق میں معلوم ہوا کہ ان افراد میں ورزش نہ کرنے والوں کے مقابلے میں نقصان پہنچے ڈی این اے اور غیر فعال ٹیلومیئر کی مقدار کم تھی۔

تحقیق بتاتی ہے کہ ورزش سالماتی سطح پر عمر بڑھنے کے اثرات کو کم کرنے میں مدد دے سکتی ہے جو ممکنہ طور پر عمر سے متعلقہ کیفیات کے شروع ہونے میں تاخیر کرسکتا ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔