چھوٹے بچوں کے ناخن باقاعدگی سے نہ کاٹنے کے نقصانات

ویب ڈیسک  منگل 23 اپريل 2024
[فائل-فوٹو]

[فائل-فوٹو]

ناخن نہ کاٹنے کے نقصانات کافی زیادہ ہیں بالخصوص چھوٹے بچوں کے لحاظ سے جن کے مدافعتی نظام ابھی نشو نما پارہے ہوتے ہیں۔ بچوں کے ناخن باقاعدگی سے نہ کاٹنے سے کئی ممکنہ مسائل پیدا ہو سکتے ہیں۔

درج ذیل کچھ نقصان دہ اثرات کے بارے میں ذکر کیا جارہا ہے جو غفلت کے نتیجے میں انجام پذیر ہو سکتے ہیں:

1) خراش/زخم: بچوں کے ناخن اگر طویل وقت سے نہ کاٹے جائیں تو اس سے انہیں اور دوسروں کو خرونچ آسکتی ہے، مثال کے طور پر اگر بچہ خارش کے وقت کھجانا چاہے تو اسکی جِلد پر خراش آسکتی ہے۔

2) جِلد کی جلن: لمبے ناخن بچوں کی جلد میں جلن کا باعث بن سکتے ہیں خاص طور پر چہرے کے ارد گرد اور دیگر حساس جگہوں پر۔ بچے نادانستہ طور پر اپنی جلد کو لمبے ناخنوں سے کھرچ سکتے ہیں یا رگڑ سکتے ہیں جس سے لالی، سوزش اور تکلیف ہوتی ہے۔

3) انفیکشن کا خطرہ: گندگی، بیکٹیریا اور دیگر جراثیم لمبے ناخنوں کے نیچے جمع ہو سکتے ہیں جس سے انفیکشن کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔ بچے اپنی انگلیاں اپنے منہ میں لے جاتے ہیں جس کے نتیجے میں جراثیم منہ یا جسم کے دوسرے حصوں میں منتقل ہوسکتے ہیں۔

4) سرگرمیوں میں دشواری: لمبے ناخن بچے کی روزمرہ کی سرگرمیوں میں خلل پیدا کر سکتے ہیں۔ انہیں چیزوں کو پکڑنے، برتنوں کا استعمال کرنے میں دشواری پیش آسکتی ہے جبکہ کھیل کے دوران وہ خود یا دوسروں کو انجانے میں تکلیف پہنچا سکتے ہیں۔

5) اندر کی طرف ناخن بڑھنا: جب ناخن طویل وقت تک نہ کاٹے جائیں تو یہ ارد گرد کی جلد میں بڑھنا شروع ہوجاتے ہیں۔ یہ درد، سوجن اور انفیکشن کا سبب بن سکتے ہیں اگر فوری طور پر توجہ نہ دی جائے۔

6) ناخن چبانا: لمبے ناخنوں والے بچے اپنے دانتوں سے  خود ناخن کاٹنے کی عادت پیدا کر سکتے ہیں جس سے مزید مسائل جیسے انفیکشن، ناخن کو نقصانات اور منہ سے انگلیوں تک بیکٹیریا کی منتقلی ہو سکتی ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔