رفح میں اسرائیلی حملہ 'افسوسناک غلطی' کا نتیجہ تھا؛ نیتن یاہو

ویب ڈیسک  منگل 28 مئ 2024
اسرائیلی وزیراعظم نے رفح پر حملے کو افسوسناک غلطی تسلیم کرلیا، فوٹو: فائل

اسرائیلی وزیراعظم نے رفح پر حملے کو افسوسناک غلطی تسلیم کرلیا، فوٹو: فائل

تل ابیب: اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو نے ڈھٹائی کا مظاہرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ رفح میں ہلاکت خیز اور ہولناک اسرائیلی حملہ افسوسناک غلطی کا نتیجہ تھا۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق اسرائیلی وزراعظم نیتن یاہو نے پارلیمنٹ سے خطاب میں کہا کہ معصوم شہریوں کو نقصان پہنچائے بغیر فوجی کارروائیوں کی تکمیل کی کوشش کرتے ہیں لیکن کل رفح میں بھرپور کوششوں کے باوجود ایک افسوسناک غلطی ہوئی۔

وزیراعظم بنجمن نیتن یاہو نے کہا کہ غزہ کے جنوبی شہر رفح میں اسرائیلی حملے میں ایک “افسوسناک غلطی” کے باعث  بے گھر فلسطینیوں کے خیمہ نستی میں آگ لگ گئی تھی۔

نیتن یاہو کا مزید کہنا تھا کہ رفح میں حماس کی باقی ماندہ بٹالین کو بھی تباہ کر دینا چاہیے جنھوں نے اتوار کو وسطی اسرائیل کی گنجان آبادی پر کئی راکٹ داغے حملے کیے لیکن خوش قسمتی سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔

وزیراعظم نیتن یاہو نے رفح پر حملے کی غلطی کی وضاحت نہیں کی جب کہ اسرائیلی فوج نے ابتدا میں کہا تھا کہ حماس کے ایک کمپاؤنڈ پر فضائی حملہ کیا جس میں عسکریت پسندوں کے دو سینئر کمانڈرز مارے گئے۔

اس سے قبل اسرائیلی فوج کی پراسیکیوٹر نے بھی رفح میں معصوم شہریوں کی ہلاکت کی تحقیقات شروع کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ یہ حملہ سنگین معاملہ ہے۔

واضح رہے کہ اسرائیل کے رفح میں خیمہ بستی پر حملے میں 45 فلسطینی شہید ہوگئے تھے جب کہ بچوں کی سربریدہ لاشیں بھی برآمد ہوئی تھیں جس پر اتحادی ممالک سمیت عالمی سطح پر اسرائیل کی شدید مذمت کی جا رہی ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔