رواں سال اپریل میں آئی ٹی برآمدات میں 62.3فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا

ویب ڈیسک  پير 10 جون 2024
ریکارڈ اضافے کی وجہ ایس آئی ایف سی کی جانب سے کاروبار دوست پالیسیز اور پالیسی اصلاحات ہیں

ریکارڈ اضافے کی وجہ ایس آئی ایف سی کی جانب سے کاروبار دوست پالیسیز اور پالیسی اصلاحات ہیں

 اسلام آباد: پاکستان میں گزشتہ سال اپریل کے مقابلے میں رواں سال اپریل میں آئی ٹی برآمدات میں 62.3 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

بی بی سی رپورٹ کے مطابق ایس آئی ایف سی کی کاروبار دوست پالیسیز سے آئی ٹی سیکٹر کو فروغ ملا، ریکارڈ اضافے کی وجہ ایس آئی ایف سی کی جانب سے کاروبار دوست پالیسیز اور پالیسی اصلاحات ہیں۔

یہ اضافہ دو عوامل کا نتیجہ ہے، پہلا مستحکم مقامی کرنسی اور فری لانسرز کے لیے غیر ملکی آمدنی کی مقامی بینک اکاؤنٹس میں جمع کرنے کی اجازت جبکہ دوسرا اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی جانب سے آئی ٹی کمپنیوں کی ریٹنشن کی حد میں نرمی کرتے ہوئے 35فیصد سے 50فیصد تک کر دیا گیا۔

آئی ٹی شعبہ ایس آئی ایف سی کے ترجیحی شعبوں میں سے ایک ہے جس کے فروغ کے لیے تمام اسٹیک ہولڈرز کو اعتماد میں لیا گیا۔

اس اضافے کی ایک اور اہم وجہ سالانہ 25ہزار سے زیادہ آئی ٹی گریجویٹس اور فری لانسرز کی ایک بڑی تعداد ہے جنہوں نے آئی ٹی کے شعبے میں غیر ملکی کمپنیوں سے پیسے کمائے جس سے غیر ملکی زرمبادلہ میں اضافہ ہوا۔ کسی بھی شعبہ میں بہتری کے لیے آج کے دور میں جدت بہت ضروری ہے اور اسی کو مدنظر رکھتے ہوئے ایس آئی ایف سی نے خصوصی طور پر آئی ٹی کے شعبے پر توجہ مرکوز کی ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔