پولیس کا اداکارہ قسمت بیگ کے قتل میں ملوث 4 ملزمان گرفتار کرنے کا دعویٰ

ویب ڈیسک  جمعرات 1 دسمبر 2016
مرکزی ملزم نے ادکارہ کو فیصل آباد میں ڈرامہ کرنے سے انکار پر ساتھیوں کے ذریعے قتل کرایا، ابتدائی تفتیش، فوٹو؛ فائل

مرکزی ملزم نے ادکارہ کو فیصل آباد میں ڈرامہ کرنے سے انکار پر ساتھیوں کے ذریعے قتل کرایا، ابتدائی تفتیش، فوٹو؛ فائل

 لاہور: پولیس نے اسٹیج اداکارہ قسمت بیگ کے قتل میں ملوث 4 ملزمان کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق سی آئی اے کینٹ پولیس نے اسٹیج اداکارہ قسمت بیگ کے قتل میں ملوث مرکزی ملزم سمیت 4 ملزمان کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا ہے جن میں مرکزی ملزم رانا مزمل اور اس کے ساتھی رانا فہیم، رانا تجمل اور شاہد جنجوعہ شامل ہیں۔ پولیس کے مطابق ملزمان نے اعتراف جرم کرلیا ہے، مرکزی ملزم رانا مزمل کی مقتول اداکارہ سے گزشتہ 6 سال سے دوستی تھی جب کہ ملزم اور اس کے دیگر ساتھی اداکارہ کے ساتھ کام بھی کرتے تھے جنہیں مرکزی ملزم رانا مزمل نے اداکارہ کے قتل کے لیے بطور شوٹر استعمال کیا۔

نمائندہ کے مطابق ملزم رانا مزمل اداکارہ قسمت بیگ کو فیصل آباد میں ڈرامہ کرنے کا کہہ رہا تھا اور بار بار اسرار کے باوجود اداکارہ نے ڈرامہ کرنے سے انکار کردیا جس پر ملزم نے اپنے تین ساتھیوں کو اداکارہ کے قتل کا حکم دیا، تینوں ملزمان رانا فہیم، رانا تجمل اور شاہد جنجوعہ کرائے کی گاڑی لے کر گوجرانوالہ سے لاہور پہنچے جہاں انہوں نے ہربنس پورہ میں قسمت بیگ پر فائرنگ کرکے انہیں قتل کردیا، ملزمان نے قتل کی واردات کے بعد رانا مزمل کو آگاہ کیا۔

نمائندہ نے مزید بتایا کہ پولیس نے جیو فینسنگ کے ذریعے موبائل کالز کا ڈیٹا اکٹھا کیا اور فیصل آباد سے رانا مزمل کو گرفتار کرلیا اور دوران تفتیش اس کی نشاندہی پر دیگر ملزمان کو بھی گوجرانوالہ سے گرفتار کرلیا گیا، چاروں ملزمان پولیس کی تحویل میں ہیں جن سے مزید تفتیش بھی جاری ہے۔



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔