جنوبی وزیرستان میں طالبان نے مردوں کے تنگ اور باریک کپڑوں پر پابندی لگادی

نمائندہ ایکسپریس  بدھ 10 جولائ 2013
نرم اور باریک کپڑا مسلمان کے ایمان کو ضائع کرنے کی پہلی کوشش ہے، طالبان

نرم اور باریک کپڑا مسلمان کے ایمان کو ضائع کرنے کی پہلی کوشش ہے، طالبان

وانا:  جنوبی وزیرستان کے مقامی طالبان نے پمفلٹ تقسیم کیا ہے جس میں مردوں کے تنگ اور باریک کپڑوں پر پابندی لگادی گئی۔

طالبان کی جانب سے جاری پمفلٹ میں رمضان المبارک میں تمام کپڑا فروش دکانداروں کو بھی تنبیہ کی گئی ہے کہ مردانہ یا زنانہ نرم اور باریک کپڑا یا پوشاک(سوٹ ،چادر) وغیرہ کسی دکاندار کے ہاں سے پکڑے گئے تو اس کو 50 ہزار  نقد جرمانہ کیا جائے گا اور ان کی دکان بھی 4 مہینے بند رہے گی۔ پمفلٹ کے مطابق نرم اور باریک کپڑا مسلمان کے ایمان کو ضائع کرنے کی پہلی کوشش ہے۔

پمفلٹ میں کہا گیا ہے کہ باریک کپڑوں کے استعمال سے حیاختم ہوجاتی ہے،  طالبان نے تمام درزیوں کو وارننگ دی ہے کہ وہ فوری طورپر تنگ کپڑے سینا بند کردیں۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔